محبت سےنفرت--- کیا یہ ممکن ہے؟

(UA (Faraz Tanvir), Lahore)

جب انسان کے دِل میں جزبہءِ محبت پروان چڑھنے لگے تو اسے پنپنے سے روکا نہیں جا سکتا اس کی جڑیں بہت مضبوطی سے محبت کرنیوالے دل کو جکڑے رکھتی ہیں کہ پِھر کسی صورت محبت کو دِل سے اکھاڑ پھینکنا ممکن ہی نہیں رہتا سو جِس دِل میں ایک بار محبت جاگ جائے نہ وہ کم ہوتی ہے نہ ہی کبھی نفرت میں بدل سکتی ہے

کیا ایسا ممکن ہے کہ محبت سے نفرت ہو جائے---؟
آپ کی رائے کیا ہے بتائیے گا ضرور پر راقم کی رائے ہے نہیں ---
کیونکہ میرے نزدیک ایسا ممکن ہی نہیں کہ جب انسان کے دِل میں جزبہءِ محبت پروان چڑھنے لگے تو اسے پنپنے سے روکا نہیں جا سکتا اس کی جڑیں بہت مضبوطی سے محبت کرنیوالے دل کو جکڑے رکھتی ہیں کہ پِھر کسی صورت محبت کو دِل سے اکھاڑ پھینکنا ممکن ہی نہیں رہتا سو جِس دِل میں ایک بار محبت جاگ جائے نہ وہ کم ہوتی ہے نہ ہی کبھی نفرت میں بدل سکتی ہے
ایسا تو ممکن ہے کہ نفرت محبت میں بدل جائے لیکن ایسا ہونے کا امکان نہیں کہ محبت نفرت میں بدل جائے جب ایک بار کسی دِل میں محبت نے ڈیرہ جما لیا تو جما لیا پھر کوئی دستبردار نہیں کر سکتا کسی محبت کرنے والے کے دِل سے محبت کو چاہے کوئی کتنا ہی زور لگا لے کسی کے دل سے کلسی کی محبت نکالنے کے لئے کامیاب نہیں ہو سکتا کوئی کسی کو کسی کی محبت سے دستبردار کرنے میں راقم کے مطابق یہی حقیقت ہے کہ محبت کرنے والے کے لئے محبت سے دستبردار ہو جانا مشکل ہی نہیں ناممکن ہے
ہاں مگر اتنا ضرور ہے کہ ہر انسان کی زندگی میں کبھی نہ کبھی کچھ نہ کچھ بدلاؤ آتا ضرور ہے یعنی وقت کے بدلاؤ کے زیرِ اثر اِنسان کے محبوب سے اظہارِ محبت کے اطوار بدل جاتے ہیں جبکہ حقیقت میں تو ایسا ہے کہ محبت کو محبت بحرے دِل سے کوئی خالی نہیں کر سکتا لیکن وقت کے ساتھ محبت کرنے کے انداز و اطوار بدل جاتے ہیں
لیکن محبت سے نفرت کا ہو جانا---- ممکن نہیں ہوتا
 

Email
Rate it:
Share Comments Post Comments
11 Apr, 2018 Total Views: 349 Print Article Print
NEXT 
About the Author: uzma ahmad

Pakistani Muslim
.. View More

Read More Articles by uzma ahmad: 264 Articles with 202839 views »
Reviews & Comments
IMKAN.... DEPENDS ON PERSONAL EXPERIENCE
By: uzma, Lahore on May, 09 2018
Reply Reply
2 Like
uzma ahmad:
ap ki tahreer achi hay mozu bhi acha hay ..main apni raey ka ezhar in alfzoun main karna chahounga ,,..
muhabat bhi nafrat main badal sakti ha asa mumkin nahi kay insan serif muhabt hi kary..muhabat or nafrat ek hi dil se hoti ha ..yaha bat kuch youn hay kay muhabt se bhary hoay dil main kia nafrat paida ho sakti ha..han ho sakti ha..jab halat o mamlat badalty hain to muhabt se bhara dil bhi nafrat se bhar jata ha pher insan ko khud per bhi yakin nhi hota kay ye wohi dil hay jis mian kabhi mubhabt kay ambar mojood thy ..halt se mamalt se insan kay raweoun se insan ki guftagu se insan ki bol chal se insan kay andar badlao atay hain ... bohat se misalain mojood hain is door e hazir ki bhi kay apnay khoon kay reshty bhi badal jaty hain kia un kay dil main muhabt nhi hoti? hoti hay mager pher wohi bat kay halat o mamlat badalty hian to muhabt se bhara dil bhi nafrat main bdal jata ha....ye badalo hi muhabat se bhary dil ko nafrat main badal dety hain ...lakin ager guftagu or lehja har halat main acha rahy pher muhabt se bhara dil kbhi bhi nafrat main nhi badal sakta ..
By: shohaib haneef , karachi on Apr, 15 2018
Reply Reply
0 Like
Assalam o Alaikum
pehly tau tehrir paRhny pasand krny aur tehrir ap ki rai ka behd shukria
mumkin hai aisa he muamla ho muhabat sy nafraty ya nafrat sy muhabat k safar mein beshtr k sath
mumkin hai hai jaisay kbhi nafrat muhabat mein bdl jati hai wqt k ssath sath bilkul isi tarah muhabat bhi badal jaya krti ho kisi kisi k sath pr shyd wo muhabbat ho he na jo bdl jati hai muhabbat ka guman ho....q k jiska dil beshtr dil shikan riwayyon k seh jany k baad bhi na badly aur rpz e awal ki tarah muhabbat k phool ki khushbu ko apny dil mein tro taza paey wo kesai maan jaey k " Muhhabbat nafrat mein bdl jaey" esa mumkin hai.?
Mazrat k sath ab bhi yehi nzrya hai k Muhabbat nafrat mein nahi badal skti aur jo Muhabbat nafrat mein badfal jaey wo Muhabast hoti her nahi
anyways bundle of thanks for reading and give your precious words on writing
GOOD LUCK BE HAPPY AND STAY BLESSED ALWAYS
By: uzma ahmad, Lahore on Apr, 17 2018
2 Like
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.
MORE ON ARTICLES
MORE ON HAMARIWEB