پاکستان تحریک انصاف کے انوکھے کام

(Malik Jamshaid Azam, )

الیکشن سے پہلے جب تحریک انصاف کی طرف سے ٹکٹوں کی تقسیم کاسلسلہ شروع ہواتواُس وقت تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی طرف سے ایک بیان سامنے آیاتھاکہ پاکستان تحریک انصاف پارٹی ٹکٹ کے لئے ایسے لوگوں کاانتخاب کرے گی جوالیکشن جیت سکتے ہوں۔اورواقعتاََبہت سے ایسے لوگوں کوٹکٹ دی گئی جوکہ پہلے بھی عوام میں قسمت آزماچکے تھے۔ان میں سے کچھ افرادنے تو2013ء کے الیکشن میں کامیابی حاصل کی جب کے زیادہ ترکوناکامی کامنہ دیکھناپڑا۔ہارجیت الیکشن کاحصہ ہے اس سے اتنافرق نہیں پڑتامیں یہ کالم تحریک انصاف کی اُس ناانصافی کے بارے میں لکھ رہاہوجوایسے افرادکے ساتھ کی گئی جن کاشمارتحریک انصاف کے بانیوں میں ہوتاہے۔تحریک انصاف کے دونعرے بہت مشہورہیں ایک "تبدیلی" اور دوسرا "نیاپاکستان"کاہے ۔ان نعروں کاجومفہوم پاکستانی عوام کوسمجھایاجاتاہے وہ یہ ہے کہ پُرانے سیاستدانوں کے نظام حکومت کوملک سے ختم کرکے ایک نیابہترین اورایسانظامِ حکومت ملک میں متعارف کروایاجائے گاجس سے غربت کاخاتمہ ہوگا،انصاف کابول بالاہوگا،بیروزگاروں کوروزگارملیں گے اورسفارش جوکہ مختلف اداروں میں دیمک کی طرح پھیل چکی ہے اس کابھی خاتمہ ہوگا۔لیکن میری سمجھ میں یہ نہیں آتاکہ پرانے سیاستدانوں سے نیانظام حکومت کیسے لایاجاسکتاہے۔اگراس بات کوسامنے رکھاجائے کہ کچھ سیاستدان جوکہ پہلے دوسری جماعتوں میں شامل تھے وہ غلطی سے صحیح جماعت کاانتخاب نہیں کرسکے تھے اوراب وہ اپنی اُس غلطی کوسلجھاتے ہوئے تحریک انصاف کاحصہ بنے ہیں تواُن لوگوں کاکیاقصورتھاجنھوں نے پاکستان تحریک انصاف کااس وقت ساتھ دیاجب تحریک انصاف کی جیت کی دُوردُورتک کوئی اُمیدنہ تھی اورکوئی بھی نہیں جانتاتھاکہ تحریک انصاف پاکستان کی تیسری بڑی سیاسی جماعت بن کراُبھرے گی۔میرے پاس ایسے بیشمارافرادکی فہرست موجودہے جن کاشمارتحریک انصاف کے بانیوں میں ہوتاہے لیکن اب دوسری جماعتوں سے آنے والے سیاستدانوں کی وجہ سے ایسے افرادکونظراندازکردیاگیاہے جوکہ سراسرزیادتی ہے۔جب ایک بندہ کسی قسم کے مفاد کے بغیراسوقت جب پارٹی کی جیت کے امکان نہ ہوں تبدیلی کانعرہ لگاتے ہوئے پارٹی کی مقبولیت کیلئے دن رات محنت کرتارہا ہواور پھر پارٹی اپنے پاؤں پرکھڑی ہونے کے بعداس بندے کونظراندازکردے تواس بندے کے دل پرکیاگزری ہوگی اس کااندازہ لگانامشکل ہے ایسے بندے کی مثال اس کسان کی طرح ہے جوپوراسال زمین پرمحنت کرتارہاہواورجب فصل کاٹنے کاموسم آئے توکسی ناگہانی آفت کی وجہ سے اس کی فصل تباہ ہوجائے اوراسے کچھ حاصل نہ ہو۔ایسے افرادکاحوصلہ بھی دیکھنے کے قابل ہے کہ انہوں نے پارٹی کے فیصلے کوتسلیم کرتے ہوئے پارٹی کی طرف سے منتخب کئے گئے افرادکے ساتھ بھرپورتعاون کیا۔

ایک سب سے بڑاالمیہ یہ ہے کہ تحریک انصاف میں وہ افرادجومالی طورپرمستحکم ہیں وہ بجائے غریب عوام کی مددکرنے کے اپنی دولت عمران خان کوچیڑیٹی کی صورت میں دے رہے ہیں یاتحریک انصاف کے بڑے بڑے جلسوں کوکامیاب کروانے پرخرچ کررہے ہیں۔بیرونِ ملک مقیم کچھ افرادایسے بھی ہیں جوکبھی کبھارملک کاچکرلگاتے ہیں اورایک دوایسے کام کرتے ہیں جن سے اخبارات میں خبروں کاحصہ بناجاسکے اورصحافیوں کے سامنے ایسی ایسی باتیں کریں گے کہ جیسے پورے ملک میں جتنے اچھے کام ہوئے ہیں ان میں ان کابہت بڑاحصہ ہے۔ جبکہ ان کے پیسوں کااصل محوِنظرغریب عوام کی بجائے عمران خان،ابرارالحق،اسدعمر،شاہ محمودقریشی یااسی طرح کے مختلف پارٹی رہنماؤں کے جلسے ہوتے ہیں۔مجھے یہ بات سمجھ میں نہیں آتی کیاایسے لوگوں کے پاس جلسوں کیلئے پیسے نہیں ہیں جن کی جائیدادیں اتنی ہیں کہ حساب لگانامشکل ہے۔دراصل پارٹی لیڈروں کے جلسوں پرپیسے اسلئے خرچ کئے جاتے ہیں تاکہ پارٹی میں اپنی اہمیت پیداکی جائے اور عہدے حاصل کئے جاسکیں۔

عمران کی طرف سے شوکت خانم ہسپتال بنایاگیا۔جس کامقصدغریب عوام کامفت علاج کرنااوراُن کوبین الاقوامی علاج کی سہولتیں ملک کے اندرمہیاکرناہے۔پی ٹی آئی کے ورکراپنی پارٹی کے بارے میں اورعمران خان کے بارے میں یہ دلائل دیتے ہیں کہ عمران خان نے ملک میں غریبوں کیلئے یہ ایک ہسپتال بنوایاجوکہ ایک بہت بڑاکارنامہ ہے میں بھی اس اقدام کوبہترین کہتاہوں لیکن میرے خیال میں عمران خان کواس ہسپتال کیلئے چیڑیٹی کاسہارانہیں لیناچاہئیے تھاکیونکہ چیڑیٹی کاسہاراتوایسے بندے کولیناچاہئیے جواپنے پاس ہسپتال بنانے کیلئے پیسوں کی استطاعت نہ رکھتاہو۔عمران خان نے تقریباََاکتیس سال کرکٹ کھیلی اوران اکتیس سال میں سے صرف آخری پانچ سال کی کرکٹ کی کمائی ہسپتال بنانے پرخرچ کردی جاتی توبغیرکسی چندے کے ہسپتال قائم کیاجاسکتاتھا۔کیاپاکستان میں موجودمالدارافرادملک کے غریب افرادکیلئے کوئی بھی ایسی سہولت نہیں بنواسکتے جس میں خالصتاََان کی اپنی آمدنی شامل ہو۔

تحریک انصاف کے سامنے انڈیاکی عام آدمی پارٹی کی مثال موجودہے جس نے الیکشن میں جیت کی پرواہ نہ کرتے ہوئے ایسے افرادکوٹکٹ دی جنھوں نے پہلی دفعہ الیکشن لڑا۔اوربیشمار پذیرائی حاصل کی ۔ابھی بھی تحریک انصاف کوچاہئے کہ جب تبدیلی کانعرہ لگایاہے توپھرہارجیت کی پروانہ کرتے ہوئے نئے اورملک وعوام سے مخلص لوگوں کوآگے آنے کے مواقع فراہم کرے جس کوعوام میں سراہاجائے گااوراس سے ملک میں تبدیلی بھی آئے گی ۔

Email
Rate it:
Share Comments Post Comments
03 Apr, 2014 Total Views: 3595 Print Article Print
NEXT 
About the Author: Jamshaid Malik

You Can Get More Info About Malik Jamshaid Azam With Face Book Page Link.

https://www.facebook.com/MalikJamshaidazamofficial
.. View More

Read More Articles by Jamshaid Malik: 43 Articles with 61399 views »
Reviews & Comments
You Are Proud of Pakistani Malik saab.
By: Junaid, Lahore on Dec, 03 2014
Reply Reply
1 Like
ملک صاحب آپ نے بہت خوب لکھاہے اورامیدہے کہ آپ اپنے فینزکومایوس نہیں کریںگے۔
By: Salma, Sialkot on Sep, 06 2014
Reply Reply
11 Like
Very Nice.
By: Rida Butt, Islamabad on Sep, 04 2014
Reply Reply
9 Like
ملک صاحب میں آپ کو ذاتی طور پر جانتا ہوں اور مجھے پتہ ہے کہ آپ تحریک انصاف کو پسند کرتے ہیں اور یہ آپ کی اس جماعت سے محبت ہی ہے جو آپ اس پر تنقید کر رہے ہیں تاکہ یہ مزید بہتر ہوسکے۔
By: Umar Butt, Lahore on Aug, 19 2014
Reply Reply
6 Like
Bohat acha column likha hai ap ne. Imran Khan kuchh tabdeli nahi la sakta. Allah aap ko khush rakhay.
By: Ausaf, Islamabad on Jul, 19 2014
Reply Reply
4 Like
Great Sir.
By: Abdul Sattar, Karachi on Jul, 17 2014
Reply Reply
3 Like
ملک صاحب آپ نےبہت اچھاکالم لکھاہےاورایسےکالمزمزید لکھتے رہییے۔
پاکستان تحریک انصاف کی تبدیلی دیکھنی ہے تووہ خیبرپختونخوامیں آکردیکھ سکتاہےجہاں ابھی تک کوئی خاطرخواہ کام نہیں ہواہاںالبتہ لفظوں کی تبدیلی ضرورآئی ہے
By: Shahid Imran, KpK on Apr, 30 2014
Reply Reply
22 Like
خبر آئی ہے کہ عمران خان اور طاہرالقادری کے مابین اتحاد قائم ہونے جارہا ہے۔ بعض لوگ اسے غیر فظری اتحاد قرار دے رہے ہیں جبکہ میرے خیال میں ۔ طاہرالپادری اور عمران خان دراصل فطری اتحادی ہیں، غیرفطری نہیں۔ “فطری اتحادی“ میں اسلئے کہہ رہا ہوں کہ یہ دونوں بھی اپنے انہی پاکستان دشمن آقاؤں کے “مُہرے“ ہیں جن کی ہدایت کے مطابق ہی پاکستان کی قیادت تبدیل ہوتی ہے۔ وہ چاہتے ہیں کہ جب نواز شریف اُن کے پلان کے مطابق ناکام ہو جائے تو متبادل بھی ان کے مطابق ہی آئے۔ اے اللہ ! پاکستان کی حفاظت فرما۔
By: M S, Faisalabad on Apr, 29 2014
Reply Reply
5 Like
واہ صاحب واہ ۔ کیا الفاظ مارے ہیں ۔طاہرالپادری ۔ عمران ۔کیا یہ دونوں ملکہ برطانیہ کے حلف بردار ہیں ۔ اگر سچ ہے ۔ تو مجھے سمجھ نہیں آتی کہ پھر یہ محب وطن پاکستانی ان کو اپنا مسیحا کیوں مانتے ہیں ۔ میرے خیا ل میں یہ سب ایک گھاٹ کے پانی پینے والے ہیں ۔ سونامی خان اور طاہر الپادری ۔دال میں کچھ کالا نہیں بلکہ سب دال کالے ہیں ۔ اللہ آپ کو جزائے خیر دے ۔ اور ان بے خبرمریدین کو عقل سلیم و کلیم عطاء فرمائے ۔
By: syed abubakar, sadat nazar swabi kpk on Apr, 30 2014
1 Like
WONDER FUL ARTICAL I REALLY APRICIATE IT ALLAH ALWAYS BLESS YOU MR JAMSHAID AZAM.
By: ROBINA, Rawalpindi on Apr, 26 2014
Reply Reply
5 Like
mai kafi arsa sai hamariweb.com ki article reader ho and mai pehli dfa daikh rhi ho k aik nojwan column writer itni tezi sai maqbool ho chuka hai bohat khoob is ki waja yai Ho Skti hai k YAI NOjwan koi diomand hai jis ki chamak Itni jldi pheli hai Allah nzr e bad sai bchaye and Bohat khobsorat tarekey sai likhey gaey column hai jin ki jitni dad d jaey bohat kam hai very weldon and very nice.
By: Prof Saima Batool, Lahore on Apr, 26 2014
Reply Reply
3 Like
Imran Khan ko chahye tha k wo mna ki seat chor kr kpk mai mpa ki seat par zamni election mai hisa ley kr wha kpk ka cm hud banta phir daikhtey yai kitney pani mai hai shehbaz sharikf zyada nhi to 3 percent shi lekin kam krta hai wha to kuch nazar nhi a rha.
By: Noman Khan, Karachi on Apr, 24 2014
Reply Reply
6 Like
south africa k president ney 90 days mai kr k dikhaya hai imran khan 90 days kia 90 years mai kuch nhi krney wala.
By: Nazia, Karachi on Apr, 23 2014
Reply Reply
12 Like
واقعی انسان بڑا جلدباز ہے۔پانچ سال کے لئے جمہوری حکومتیں آتی ہیں۔ہم لوگ ایک سال پورا ہونےسے پہلے ہی بے صبرےہوجاتے ھیں۔آرمی ڈکٹیٹرز کے لمبے لمبےادوار میں جب سٹیٹس کو ہوتا ہیے تو ہم سب کو سانپ سونگھ جاتا ہے۔ دعا کریں کہKPK کی حکومت کےخلاف کوئی سازش نہ ہو تو انشاء الله مثبت نتائج بھی جلد نظر آنا شروع ہوجایئں گے۔
By: Mehfooz, karachi on Apr, 21 2014
Reply Reply
0 Like
جو لو گ بلا شرکت غیرے کسی صوبے کے سیاہ و سفید کے مالک ہوں ۔ ان کے کام میں کسی اور کا عمل دخل نہ ہو ۔ اپنے سارے فیصلے خود کر تے ہوں ۔ دل صاف اور ضمیر مطمئین ہو ۔ اور اپنے دل میں عوام کا دکھ درد کا جذبہ رکھتا ہو ۔ ان کے لئے سا ل نہیں چند مہینے ہی کافی ہو تے ہیں ۔ اور رہی کے پی کے حکومت کے خلاف کسی سازش کی بات تو ۔ ایک سال ہو گیا ۔ آخر کس نے ان کے خلاف سازش کی ہے ۔ ہم نے تو ابھی تک نہیں دیکھا ۔ لیکن یہ انقلابی روز یہ شکوے کرتے رہتے ہیں ۔ کہ اگر ہمارے حکومت کے خلا ف کو ئ سازش ہوئ تو ؟؟؟؟؟ وغیرہ ۔ اس سے ایسا لگتا ہے ۔کہ ناچ نہ جانے آنگن ٹیڑھا ۔والی بات ان پہ صادق آتی ہے ۔ جناب محفوظ صاحب ! انسان تو جلد باز اس لئے ہے ۔ کہ جب اس کو کوئ لیڈر سبز باغ دکھائے ۔ اس سے تبدیلی کے نام پر ووٹ لے لے ۔ اس کو ایک نئے پاکستان کا خواب دکھا دے ۔ لیکن اقتدار ملتے ہی وہ ان لیڈروں کی رنگ میں رنگا جائے ۔ جو اس سے پہلے تھے ۔ نظام وہی کی وہی رہے ۔ اور یہ اسی طرح مفادات اور مصلحت کے بھینٹ چڑ ھ جائے ۔ جو اس سے پہلے والے لیڈر ہوا کرتے تھے ۔ تو پھر کیا اس سے وہ پہلے والے لیڈر ٹھیک نہیں تھے ۔ ان میں کیا خامی تھی ۔ میرے معزز بھائیوں ! ہر پاکستانی تبدیلی چاہتا ہے ۔ نظام کی تبدیلی ذہنوں کی تبدیلی ۔ لیکن کیا تبدیلی باتوں سے آتی ہے ۔ تبدیلی کے لئے اپنے ذات میں تبدیلی ضروری ہو تی ہے ۔ اپنے مفادات کو اصول پر قربان کرنے کی ضرورت ہو تی ہے ۔ اشخاص سے نکل کر کردار اور اذہان کے ذریعے تبدیلی لانے کی ضرورت ہو تی ہے ۔ اس کے لیے کسی کپتان کسی ہسپتال کسی سو کنال کے محل نما کو ٹھی یا بنی گالہ یا لو دھراں نہیں بلکہ کسی احمدی نزاد ، کسی کجریوال جیسے کردار کی ضرورت ہو تی ہے ۔ یہ کے پی کے حکومت تو عمران خان کے لئے قدرت کی طرف سے ایک ٹیسٹ ہے ۔ جو قدرت خداوندی اس کے صلا حیتوں کا امتحان لینا چاہتا ہے ، کہ کیا یہ بندہ جو اپنے آپ کو عقل کل سمجھتا ہے ۔ کیا اس میں وہ صلا حیتیں بھی ہیں ۔ یا ویسے چولاں مار رہا ہے ۔ تو یاد رکھیں جو اپنے گھر کو ٹھیک کرنے کی صلاحیت نہ رکھتا ہو ۔ اور پھر ایک چھوٹے سے صوبے کا معاملا ت بخوبی نہ چلا سکتا ہو۔ وہ کیا خاک پاکستان کے معاملا ت چلا سکیں گے ۔ یا د رکھیں ۔ حکومت کر نا اور خدمت کرنا الگ کام ہیں ۔اگر آپ کے لیڈر کا منشاء صرف پاکستان پر حکومت کرنا تھا ۔ تو اللہ نے اس کا وہ خواب ادھورا چھوڑدیا ۔ اور اگر خدمت کرنا تھا ۔ تو کے پی کے کا حکومت اس کے حصے میں آیا ہے ۔ کرے ؟ کس نے روکا ہے اس کو ۔ آپ کے انقلابی لیڈر کو چاہئے کہ دوسرے سیاسی لیڈروں کی طرح اپنے مفادات کے خول سے باہر نکلے ۔ چند اشخاص کے حصار سے نکل کر عوام کی خدمت کے لئے سر بکف ہو کر نکلے ۔ اور دیکھے کہ پاکستانی عوام اس کو سر پر بھٹا تے ہیں ۔ اگر وہ صرف نعروں اور دعؤؤں سے عوام کے جذبات کے ساتھ کھیلتے رہے ۔ تو وہ کبھی عوامی غیض و غضب سے نہیں بچ سکے گا ۔ میں آپکی لیڈر کے لئے آپ کے جذبا ت کو قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہو ں ۔لیکن کیا کروں جو حقیقت میرے سامنے ہے ، وہ بطور ایک عام پاکستانی میں منافقت سے کام لے کر نظر اندازنہیں کر سکتا ۔ شکریہ
By: syed abubakar ali shah, Sadat Nazar Swabi KPK on Apr, 23 2014
3 Like
جس نے کچھ کرنا ہو وہ نوے دنوں میں کر دیتاہے.
By: Prof Salma Batool, Lahore on Apr, 21 2014
3 Like
Imran Khan humen badal nhe sakta jabtak hum khud apne app ko badalne ka irada na kar lenn... jab hi tu hum Pakistan ko badal sakte hain
By: Usman Habib, Sadiqabad on Apr, 11 2014
Reply Reply
12 Like
Imran Khan buzdil he, 90 (mqm)per maafian mangta he, Karachi aane ke lia mqm se NOC leta he, Ghaddar Musharraf se London mein milta he, Agencies se milta he, DAROON hamloon ka bahana banakar logon ko bewaqoof bana raha he YE APNI HESIYAT KHO CHOKA HE< SAHI SEYASAT KAR NE MEIN BAHUT TIME LAGE GA< KAHEEN BHI NAHI TAHARTA HE< POLICY BADALTA REHTA HE< YR KUCH BHI HASIL NAHI KAR SAKTA HE< HAKOMAT MEIN AANE SE PEHLE SUB ACHI ACHI BATEEN KARTE HE< AUR HAKOMAT MILNE KE BAD< AWAM KO APNA DUSHMAN SAMAJH NE LAGTE HEIN< UN SE DOOR HOJATE HEIN< PAKISTAN KE LEADER< PPP>NAWAZ LEAGE< Q LEAGE< MQM< ANP SUB AMERICA KI AASHER BAD SE HAMAT BANATE HEIN< IS BEWAQOOF SE KAHO KE WO BHI AMERICA KI AASHER BAD LEWAY< US KE BAGAIR PAKISTAN KI HAKOMAT MEIN SHAMIL NAHI HOSAKTA HE< MQM KE KHILAF SAC CHE SABOOT RAKH NE WALA IMRAN AB MQM SE MAAFI MANGTA HE< SHARAM KA MOQAM HE< PAKISTAN MEIN HAKOMAT KARNA CHAHTA HE AUR AWAM KI KHIDMAT KARNA CHAHTA HE TO AMERICA SE NOC LEWAY NAKE KARACHI AANE KE LIA MQM SE NOC LE< DIRECT AMERICA SE KIYOON NAHI BAT KARTA HE< AMERICA SE BANA KAR RAKHE JESEY TAMAM PAKISTANI LIDROON NE RAKHE HOWE HEIN< AMERICA KI AASHER BAD KI WAJAH SE KANGLE LEADER AAJ ARBOON DOLLAR KE MALIK BAN GAE HEIN< (KANGLE LEADER MQM KE LIA ISTEMAL KIYA YE) IN SE SABAQ LE
By: Rais Khan, Islamabad on Apr, 11 2014
Reply Reply
2 Like
Great Great Writing By Malik Saab.
By: Rukhsana Kanwal, Karachi on Apr, 09 2014
Reply Reply
2 Like
ہر الیکشن کے بعد ایک مداری ہم پر مسلط ہو جاتا ہے جو مسائل کی گردان کو دہرا کر اور اپنی جیب کو بھر کر چلا جاتا ہے۔ اگلے الیکشن میں اسکی پارٹی کچھ سالوں کے لیے پاور سے آؤٹ ہو جاتی ہے۔ لیکن اس سے اگلی باری پھر انھی کی لگ جاتی ہے۔ بچپن سے ہی انھی چہروں کو حکومت کے سنگھاسن پر براجمان دیکھ رہا ہوں۔ پنجاب میں شریفوں کی پانچویں اور وفاق میں تیسری باری ہے۔ ایسا ہی حال سندھ میں روٹی کپڑا اور مکان والوں کا ہے۔ میں نے عقل و خرد کے بہت گھوڑے دوڑائے مگر یہ سمجھنے سے قاصر ہوں کہ آخر میری قوم انکو بار بار منتخب کر کے ان سے نکالنا کیا چاہتی ہے ؟ حالانکہ یہ طے شدہ اور ایک مسلمہ حقیقت و اصول ہےکہ ایک ہی طرح کا تجربہ سو بار بھی کریں تو نتیجہ مختلف نہیں نکل سکتا۔ لیکن جب ان سے سوال انکی ڈلیورنس اور کارکردگی کا کیا جاتا ہے تو مارشلاؤں اور جمہوریت کے نا پختہ ہونے کا رونا رو کر اور بے شرمی و ڈھٹائی سے لب کشائی کرتے ہوئے فرماتے ہیں کہ چونکہ چنانچہ اس ملک میں کافی سال مارشلاء رہے ہیں جن کی وجہ سے جمہوریت مضبوط نہیں ہو سکی اور ناپختہ رہی۔ ابھی جمہوریت کی دوشیزہ نابالغ تھی تو ملک تباہی کے دھانے پہ کھڑا سسک رہا ہے اور اگر فوج اور ڈکٹیٹر نہ ہوتے اور جمہوریت نام نہاد پوری آب و تاب سے چمکتی َ، اور اسکی پختگی و جولانی نصف النہار پہ ہوتی تو سوچیں ملک کا کیا حال ہوتا ، میرے ملک کے ہونہار حاجی و شریف ، زرداری و مزاری ، گیلانی و مخدوم اس ملک کی در ودیوار اور اینٹوں تک کو بیچ کھاتے۔
By: Didar Murad, Chitral on Apr, 09 2014
Reply Reply
5 Like
its true, very true.
By: Hammad, Lahore on Apr, 09 2014
Reply Reply
3 Like
GEo bro i agree with U, keep it Up
By: Mubashir , Kuala Lumpur on Apr, 09 2014
Reply Reply
2 Like
kitni hush aslobi sai likha hai ap ney sub siasi na insafio ko aik colmn mai likhna bohat mushkil hota hai jo k ap ney kr dikhaya bohat hoob jnab
By: Shakeel, Jhang on Apr, 08 2014
Reply Reply
3 Like
Displaying results 1-20 (of 36)
Page:1 - 2First « Back · Next » Last
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.
MORE ON ARTICLES
MORE ON HAMARIWEB