اقتدارکا نشہ اترنے کے بعد میاں صاحب کو میثاق جمہوریت یاد آ رہا ہے: بلاول؛ نواز شریف عدالت کو دباؤمیں لانا چاہتے ہیں، خورشیدشاہ

12 Aug, 2017 نوائے وقت
چنیوٹ : پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹوزرداری نے کہاہے کہ نواز شریف اور عمران خان نے ملکر ملکی سیاست کا بیڑہ غرق کر دیا ، اقتدارکا نشہ اترنے کے بعد میاں صاحب کو میثاق جمہوریت یاد آ رہا ہے، اس بار دھاندلی نہیں ہونے دینگے، پوچھتا ہوں خیبر پختونخوا کے کس علاقے میں دودھ اور شہد کی نہریں بہا دیں؟۔ چنیوٹ میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ سوچنا ہو گا کیا یہ پاکستان قائداعظم کی سوچ والا پاکستان ہے؟ پاکستان آج بھی اندھیروں میں ڈوبا ہوا ہے۔ انہوں نے نواز شریف اور عمران خان پر کڑی تنقید کی کہاکہ دونوں نے ملکر ملکی سیاست کا بیڑہ غرق کر دیا ہے، ان کو ملک کی صورتحال کی کوئی فکرنہیں، نام نہاد بڑی سیاسی پارٹی کے لیڈرز کی یہ حالت کہ اہم مسائل پر بات نہیں کرتے، ان کی نظر صرف کرسی اور اقتدار پر ہے۔ بلاول بھٹو نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ میاں صاحب جی ٹی روڈ کے اطراف رہنے والے کیسے یاد آ گئے؟ میاں صاحب آپ کی چالبازی نہیں چلے گی، اقتدارکا نشہ اترنے کے بعد میاں صاحب کو میثاق جمہوریت یاد آ رہا ہے، میاں صاحب کو گرینڈ ڈائیلاگ یاد آ گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہماری خارجہ پالیسی کیا ہے ہماری آواز دوسرے ملکوں تک کیوں نہیں پہنچ رہی؟ پولیس اور فوج قربانیاں دے رہے ہیں، دہشت گردی پھر سے سر اٹھا رہی ہے، کہاں ہے نیشنل ایکشن پلان؟ نیشنل ایکشن پلان پر عمل کیوں نہیں ہو رہا، دہشت گردی، فرقہ وارایت صرف آپریشن سے ختم نہیں ہو سکتی، اگر جڑ سے ختم کرنا ہے تو پوری قوم اور تمام سیاسی جماعتوں کو اس ناسور کیخلاف جنگ کرنا ہو گی، نیشنل ایکشن پلان پر مکمل عمل کرنا ہو گا۔ بلاول بھٹو نے خیبر پختونخوا میں پی ٹی آئی کی حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ عمران کے وزیر اعلی پر کرپشن کے الزامات لگ رہے ہیں، وزیر اعلی کی کرپشن سے عمران کا جہاز اور جہانگیر ترین کا کچن چل رہا ہے، پوچھتا ہوں خیبر پختونخوا کے کس علاقے میں دودھ اور شہد کی نہریں بہا دیں؟ اگر نئے پاکستان میں گالی کی سیاست ہو گی تو پھر نیا پاکستان نہیں چاہیے، میاں صاحب اور عمران دونوں ایک ہی سکے کے دو رخ ہیں، ان کی منزل صرف اقتدار ہے۔ اس سے پہلے قومی اسمبلی میں قائدحزب اختلاف سید خورشید شاہ جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ یہ تاریخ کا ستم ہے کہ روحانی باپ کا بنائے ہوئے قانون میں روحانی بیٹا پھنس گیا ہے،جب ہم نے کہا کہ آئین سے 63،62 کی شک نکالنے کی کوشش کی گئی تو اس وقت نواز شریف نے انکار کر دیا تھا۔اب نواز شریف خود 62 اور63 کے تحت نااہل ہو گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی اقتدار کی پارٹی نہیں ،بلکہ عوام کی پارٹی نہیں ہے جس کا منشور عوام کی خدمت ہے۔ نواز شریف پر تنقید کرتے ہوئے ان کاکہنا تھا کہ جو کچھ یہ کر رہے ہیں اس سے ملک کا کوئی فائدہ نہیں ہو گا،نواز شریف عدالت کو دباو¿میں لانا چاہ رہے ہیں۔پاکستان پیپلزپارٹی کے کارکنا ن کو مخاطب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ پیپلزپارٹی کے جیالوں کو باہر نکلنا ہو گا،پنجاب والوں کو سچائی کا ساتھ دینا ہو گا۔ اعتزازاحسن نے اپنے خطاب میں کہاکہ شریف برادران نے جعلی کاغذات پر دستخط کرکے عدالت میں استعمال کیا لیکن قانون کی پکڑمیں آگئے ، ہم عدالتوں کے ساتھ کھڑے ہیں اور ان کے فیصلے کی مکمل حمایت بھی کرتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ نوازشریف کی ریلی میں بچہ جن گاڑیوں سے کچلا گیا ہے وہ شریف خاندان کی تھیں لیکن افسوس کہ بچے کو بری طرح کچلنے کے بعد نام ایلیٹ فورس کی گاڑی کا لگایا جارہا ہے۔
 

Watch Live News

 مزید خبریں 
« مزید خبریں
Post Your Comments
Select Language: