جنوبی افریقہ: ’شیروں کے غیرقانونی شکاری کو شیر کھا گئے‘

13 Feb, 2018 بی بی سی اردو
جنوبی افریقہ میں پولیس کا کہنا ہے کہ کروگر نیشنل پاک کے قریب شیروں کے ایک مشتبہ غیرقانونی شکاری کو شیروں نے کھا لیا ہے۔
شیر
CAMERON SPENCER/GETTY IMAGES
شیروں کا جسم بعض اوقات افریقہ اور دیگر ممالک میں روایتی ادویات بنانے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے

جنوبی افریقہ میں پولیس کا کہنا ہے کہ کروگر نیشنل پاک کے قریب شیروں کے ایک مشتبہ غیرقانونی شکاری کو شیروں نے کھا لیا ہے۔

جانوروں نے تقریباً تمام جسم کھا لیا تاہم جسم کا کچھ حصہ ایک گیم پارک سے ہفتہ وار چھٹیوں کے دنوں میں ملا تھا۔

لمپوپو پولیس کے ترجمان موئٹشے نگوئپے نے خبررساں ادارے اے ایف پی کو بتایا کہ ’ایسا دکھائی دیتا ہے کہ وہ شخص گیم پارک میں غیرقانونی شکار کر رہا تھا جب شیروں نے حملہ کیا اور اسے ہلاک کر دیا۔‘

’وہ اس کا جسم کھا گئے، تقریباً پورا جسم، اور صرف اس کا سر اور کچھ باقیات بچی ہیں۔‘

جنوبی افریقی ویب سائٹ آئی وٹنیس نیوز کے مطابق پولیس تاحال ہلاک ہونے والے شخص کو شناخت نہیں کر سکی۔ اس کے جسم کے قریب سے ایک بھری ہوئی شکاری بندوق اور گولیاں بھی ملی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں!

شیر اور چیتے سے کیسے بچا جا سکتا ہے؟

نایاب سفید شیروں نے رکھوالا ہلاک کر ڈالا

آدم خور شیرنی کو مارنے کا حکم برقرار

خیال رہے کہ جنوبی افریقہ کے صوبہ لمپوپو میں حالیہ برسوں میں شیروں کے غیرقانونی شکار میں اضافہ ہوا ہے۔

شیروں کا جسم بعض اوقات افریقہ اور دیگر ممالک میں روایتی ادویات بنانے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔

جنگلی حیات کے تحفظ کی تنظیم بورن فری فاونڈیشن کا کہنا ہے شیروں کی ہڈیوں اور جسم کے دیگر حصوں کی جنوبی مشرقی ایشیا میں مانگ میں اضافہ ہورہا ہے، جہاں بعض اوقات انھیں چیتوں کی ہڈیوں کے متبادل کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے۔

جنوری 2017 میں لمپوپو میں تین نر شیروں کی لاشیں ملی تھیں جنھیں زہر دے کر ہلاک کیا گیا تھا اور ان کے سر اور پنجے کٹے ہوئے تھے۔


 

Watch Live News

 مزید خبریں 
« مزید خبریں
Post Your Comments
Select Language: