ناسا اپنی نئی سیٹلائٹ کل خلا میں بھیجے گا

17 Apr, 2018 اب تک
ناسا اپنی نئی سیٹلائٹ کل خلا میں بھیجے گانیو یارک:(16 اپریل 2018) امریکی خلائی تحقیقی ادارہ ناسا کل خلا میں نئی سیٹلائٹ بھیج رہا ہے جس کا مقصد نظام شمسی کے باہر ایسے سیاروں کی تلاش ہے جو قریب ترین اور روشن ترین ستاروں کے گرد گھوم رہے ہیں۔ٹیس نامی خلائی جہاز فلوریڈا میں کیپ کنیورل ائیر فورس اسٹیشن سے صبح لانچ کیا جائے گا جس کے ٹیلی اسکوپس کے ذریعے ناسا مستقبل میں خلا میں گھومنے والے سیاروں پر زندگی کی تلاش کرے گا۔ٹرانزیٹنگ ایگزوپلینٹ سروے سیٹلائٹ تقریباً پورے آسمان کا سروے کرے گا اور یہ ابتدا میں جنوبی نصف کرے پر ایک سال گزارے گا جس کے بعد ایک سال شمالی نصف کرے پر گزار کر اس کا سروے کرے گا۔ ناسا کے لانچ سروس پروگرام کے سینئر ڈائریکٹر عمر بائز کا کہنا ہے کہ ہم نے سیٹلائٹ چھوڑنے کے سلسلے میں ہر چیز کا نہایت باریک بینی سے جائزہ لے لیا ہے اور تمام معاملات درست جارہے ہیں۔ناسا کا کہنا ہے کہ اس سیٹلائٹ کے ذریعے ان سیاروں کی کھوج کی جائے گی جو زمین کی طرح اپنے اپنے میزبان سورج کے گرد گھوم رہے ہیں۔ یہ ان سیاروں کا میزبان ستارے سے فاصلہ، حجم اور دیگر اہم معلومات بھی فراہم کرے گا، جس سے ان سیاروں پر زندگی کے امکانات سے متعلق آگاہی ملے گی۔یہ بھی پڑھئیےسویڈن میں پہلی الیکٹرک سڑک تیارجاپانی ماہر نے جدید ٹیکنالوجی سے لیس ربورٹ تیار کرلیاAbbTakk News Abbtakk Science and Technology NASA
 

Watch Live News

 مزید خبریں 
« مزید خبریں
Post Your Comments
Select Language: