وادی نیلم میں پل ٹوٹنے سے ہلاکتوں کی ذمہ داری کس پر ہے

16 May, 2018 وائس آف امریکہ اردو
مظفرآباد —پاکستان کے زیر انتظام کشمیر کی سیاحت کے لیے مشہور وادی نیلم میں اتوار کے روز پیدل نالہ عبور کرنے کے لئے بنائے گئے پل کے ٹوٹنے سے نالے میں گرنے والے 25 سیاحوں میں 13 کو بچا لیا گیا جبکہ سات کی نعشیں نکالی جا چکی ہیں اور پانچ تاحال لاپتا ہیں ۔جن کی تلاش کے لیے فوجی اور سول اداروں کی امدادی ٹیمیں کام کر رہی ہیں ۔وادی نیلم کشمیر کو پاکستان اور بھارت کے درمیان تقسیم کرنے والی جنگ بندی لکیر پر واقع ہے ۔پہاڑوں، ندی نالوں، آبشاروں اور قدیم جنگلات کی وجہ سے ہر سال بالخصوص گرمیوں کے موسم میں سیاحوں کی ایک بڑی تعداد ادھر کا رخ کرتی ہے ۔ جن کی تعداد میں ہر سال اضافہ ہو رہا ہے۔ محکمہ سیاحت کے حکام کا کہنا ہے کہ وادی نیلم میں کٹن کے مقام پر جاگراں نالے پر نصب ہے ۔وہاں پہلے بھی اس نوعیت کے حادثات پیش آ چکے ہیں جس کی وجہ سے وہاں وارننگ سائن کے بورڈ نصب کیے گیے ہیں۔
 

Watch Live News

 مزید خبریں 
« مزید خبریں
Post Your Comments
Select Language: