خیبر پختونخواہ میں صحت کی سہولیات کے دعوے صرف دعوے ہی نکلے

14 Jun, 2018 اب تک
خیبر پختونخواہ میں صحت کی سہولیات کے دعوے صرف دعوے ہی نکلےپشاور:(14 جون 2018) خیبر پختونخواہ میں صحت کی سہولتوں کے دعوے جھوٹے نکلے۔ بنوں میں کانگو وائرس سے متاثرہ نوجوان علاج کی سہولت میسر نہ ہونے کے سبب دم توڑ گیا۔تفصیلات کے مطابق موسم بدلتے ہی خیبر پختونخواہ میں کانگو وائرس نے سر اٹھانا شروع کر دیا ہے۔ بنوں کے رہائشی پچیس سالہ شفیع اللہ کانگو وائرس کا شکار ہو گیا جس کے بعد مریض کو حیات آباد میڈیکل کمپلیکس بھیجا گیا تھا جہاں اسپتال کی انتظامیہ نے مریخ کو داخل کرنے سے انکار کر دیا تھا۔بعد ازاں کانگو وائرس سے متاثرہ مریض کو حیات آباد میڈیکل کمپلیکس میں سہولیات نہ ہونے پرخیبر ٹیچنگ اسپتال ریفر کر دیا گیا۔ ماڈل اسپتال میں بھی آئسو لیشن روم نہ ہونے کا بہانہ کر کے مریض کو طبی سہولیات دینے سے انکار کر دیا گیا۔پچیس سالہ شفیع اللہ اسپتالوں میں کونگو وائرس سے متعلق سہولیات اور آئسولیشن وارڈ نہ ہونے کے باعث خیبر ٹیچنگ اسپتال میں دم توڑ گیا۔
 

Watch Live News

 مزید خبریں 
« مزید خبریں
Post Your Comments
Select Language: