زلفی بخاری کا نام بلیک لسٹ سے نکالنے کی درخواست پر اسلام آباد ہائیکورٹ کا نوٹس

14 Jun, 2018 اب تک
زلفی بخاری کا نام بلیک لسٹ سے نکالنے کی درخواست پر اسلام آباد ہائیکورٹ کا نوٹساسلام آباد: (14 جون 2018) عمران خان کے قریبی دوست زلفی بخاری کا نام بلیک لسٹ سے نکالنے کی درخواست پر اسلام آباد ہائیکورٹ نے وزارت داخلہ اور نیب کو نوٹس جاری کردیا ہے۔ عدالت نے وزارت داخلہ کا نوٹیفکیشن معطل کرکے حکم امتناع دینے کی زلفی بخاری کی درخواست مسترد کردی ہے۔زلفی بخاری کا نام بلیک لسٹ میں شامل کرنے کا نوٹیفکیشن اسلام آباد ہائیکورٹ میں چیلنج کردیا گیا ہے۔ سیکشن افسر وزارت داخلہ اور نیب جواب 21 جون کو طلب کردیا ہے۔یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیےجسٹس عامر فاروق نے زلفی بخاری کی درخواست پر سماعت کی، درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ زلفی بخاری پر عائد سفری پابندیاں بنیادی انسانی حقوق سے متصادم ہیں۔ 11 جون کو عمرہ روانگی پر ایئرپورٹ پر غیر قانونی طورپر روکا گیا۔ بعد ازاں چھ دن کیلئے استثناء دیتے ہوئے جانے کی اجازت ملی۔درخواست میں کہا گیا کہ نام بلیک لسٹ میں غیر قانونی طور پر شامل کیا گیا۔ نیب صرف جاری انکوائری کی بنیاد پر سفری پابندی نہیں لگا سکتا۔ وزارت داخلہ اور نیب کو  سفری پابندی پر احکامات ختم کرنے کا حکم جاری کیا جائے۔عدالت نے زلفی بخاری کا نام بلیک لسٹ سے نکالنے کی درخواست باقاعدہ سماعت کیلئے منظور کرتے ہوئے نیب اور وزارت داخلہ کو  نوٹس جاری کردیا ہے۔ وزارت داخلہ کے سیکشن افسر ای سی ایل کو بھی آئندہ سماعت پر طلب کرلیا گیا، تاہم زلفی بخاری کی حکم امتناع جاری کرنے کی درخواست عدالت نے مسترد کردی ہے۔
 

Watch Live News

 مزید خبریں 
« مزید خبریں
Post Your Comments
Select Language: