نوازشریف اورمریم نواز ابو ظہبی پہنچ گئے

13 Jul, 2018 اب تک
نوازشریف اورمریم نواز ابو ظہبی پہنچ گئےویب ڈیسک: (13 جولائی 2018) نواز شریف اور مریم نواز کی پرواز امارات کے ائیرپورٹ پر لینڈ کر گئی، سابق وزیراعظم سات گھنٹے  قیام کے بعد آج شام سوا چھ بجے لاہور پہنچیں گے، جہاں دونوں کو گرفتار کر لیا جائے گا۔تفصیلات کے مطابق نواز شریف اور مریم کا طیارہ آج شام سوا چھ بجے لاہور کے علامہ اقبال ایئرپورٹ پر لینڈ کرے گا، وہ گزشتہ شام ہیتھرو ایئر پورٹ سے روانہ ہوئے تھے۔ مسلم لیگ (ن) کے کئی کارکن اور رہنما بھی ان کے ساتھ پاکستان آ ہے ہیں۔Abu Dhabi airport. pic.twitter.com/CtUK3vCkMu— Maryam Nawaz Sharif (@MaryamNSharif) July 13, 2018ایون فیلڈ اپارٹمنٹس سے نوازشریف اور مریم کی روانگی سے قبل عزیز و اقارب کی آنکھیں اشکبار نظر آئیں، نواز شریف نے حسین نواز، اسحاق ڈار کو گلے لگایا۔ دونوں نے نواز شریف کیلئے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔ اس موقع پر مریم نواز کے بچے بھی موجود تھے۔ مریم نواز بھی اپنے بچوں سے ملتے وقت آبدیدہ ہو گئیں۔امکان ہے کہ سیکیورٹی حکام انہیں گرفتار کرکے ہیلی کاپٹر کے ذریعے براہ راست اڈیالہ جیل لے جائیں گے۔ ‏نواز شریف اور مریم نواز کی گرفتاری کے لیے دو ہیلی کاپٹر لاہور ایئرپورٹ پر پہنچا دیئے گئے ہیں۔ طیارے کو لاہور ایئر پورٹ پر اترتے ہی ایئر پورٹ سیکیورٹی، سول ایوی ایشن اور ایلیٹ کمانڈوز اپنے حصار میں لیں گے۔ نیب کی ٹیم کو لیڈی کمانڈوز کی خدمات بھی حاصل ہیں۔ویڈیودیکھنے کیلئے پلے کابٹن دبائیںذرائع کے مطابق سابق وزیراعظم لندن سے براستہ ابوظہبی جمعہ کی شام سوا 6 بجے کے قریب پاکستان پہنچیں گے۔ رہنما مسلم لیگ (ن) مشاہد حسین سید کا کہنا تھا کہ میاں صاحب کی اہلیہ کی بیماری کے باوجود اپنی قومی ذمہ داری کو محسوس کرتے ہوئے وطن واپس آرہے ہیں،پورا الیکشن میاں نواز شریف کے اردگرد گھوم رہا ہے۔انہوں نے بتایا کہ میاں صاحب کے ساتھ ایک سو بتیس لوگ بھی ساتھ آرہے ہیں، کچھ میڈیا کے لوگ جہاز کے اندر سے براہ راست رپورٹنگ کریں گے،جبکہ بی بی سی اور سی این این کے لوگ بھی ان کے ساتھ آرہے ہیں۔سابق وزیراعظم کی آمد سے قبل لیگی کارکنان کے خلاف کریک ڈاؤنسابق وزیراعظم کی آمد سے قبل لاہور میں پولیس نے نون لیگ کے کارکنوں کے خلاف کریک ڈاؤن کرتے ہوئے ایک سو سے زائد کارکنوں کو گرفتار کرلیاہے، گرفتار ہونے والوں کو ایک ماہ کے لیے کوٹ لکھپت جیل بھجوا دیا گیا ہے، گرفتاریوں پر مسلم لیگ نون کے رہنماؤں سمیت کارکنوں کی بڑی تعداد سراپا احتجاج بن گئی۔ کہیں ٹائر جلائے تو کہیں نعرے بازی کی ہے،گرفتار ہونے والوں میں نون لیگ کے متعدد یونین کونسل کے چئیر مین،وائس چئیرمین،کونسلر اورکارکن شامل تھے۔ویڈیودیکھنے کیلئے پلے کابٹن دبائیںکارکنان کی گرفتاریوں کے بعد بند روڈ پر سابق صوبائی وزیر بلال یاسین ،وحید عالم خان اور سابق وزیر میاں مجتبی شجاع الرحمن کی قیادت میں بند روڈ،اسلام پورہ اور شادباغ میں احتجاج کیے گئے، اس موقع پر بلال یاسین کا کہنا تھا کہ گرفتاریوں سے میاں نواز شریف کے استقبال میں کوئی کمی نہیں آئے گی میرے گھر پر بھی چھاپہ مارا گیا ہے۔لاہور کی اہم سڑکوں پر کنٹینرز لگادیئے گئےلاہور میں لیگی کارکنوں کو ائیرپورٹ کی جانب جانے سے روکنے کے لیے پولیس نے کنٹینرز مختلف شاہراوں پر کھڑے کر دیئے ہیں،مال روڈ، مزنگ، جاتی امراء اور دیگر سڑکوں پر کنٹینر رکھے گئے ہیں۔کارکنان کی گرفتاری کے بعد ماڈل ٹاؤن میں مسلم لیگ نون کے مرکزی سیکریٹریٹ میں ہنگامی پریس کانفرنس کرتے ہوئے سابق وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ کارکنوں کو گرفتار کرکے کوٹ لکھپت جیل بھیجا جارہا ہے ،حکومت کارکنوں کو بلاجواز گرفتار کرکے اشتعال پیدا کررہی ہے، ایئر پورٹ بھی ہمارا ہے،ہم سوچ نہیں سکتے ایک پتھر یا شیشہ بھی توڑیں۔ نگران وزیر اعلی پنجاب ہمارے کارکنوں کی گرفتاریاں بند کریں اور انکو فوری رہا کیا جائے۔ویڈیودیکھنے کیلئے پلے کابٹن دبائیںسابق وزیراعظم کی گرفتاری کیلئے ٹیم تشکیلدوسری جانب نیب نے ایون فیلڈ ریفرنس میں سزا پانے والے سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز کی وطن واپسی کے موقع پر گرفتاری کیلئے سولہ رکنی ٹیم تشکیل دے دی ہے، ٹیم کی سربراہی ڈائریکٹر نیب امجد علی اولکھ کریں گے، جبکہ ٹیم میں نیب کے نو افسران اور باقی پولیس افسران شامل ہوں گے۔نیب ٹیم نواز شریف اور مریم نواز کو لاہور ایئرپورٹ سے گرفتار کرے گی، جبکہ ڈی جی نیب لاہور شہزاد سلیم تمام کارروائی کی نگرانی کریں گے، جس کے لئے نیب آفس میں سیکیورٹی اہلکاروں کو بھی الرٹ رہنے کی ہدایات کی گئی ہے۔ذرائع کے مطابق نیب نے دو ہیلی کاپٹرز کا انتظام کر لیا ہے اور کابینہ ڈویژن نے دو ہیلی کاپٹرز جمعہ کے روز نیب کو مختص کر دیئے ہیں،ایک ہیلی کاپٹر لاہور اور دوسرا اسلام آباد ایئرپورٹ پر کھڑا کیا جائے گا، کسی بھی ایئرپورٹ پر اترتے ہی نواز شریف اور مریم نواز کو ہیلی کاپٹر کے ذریعے اڈیالہ جیل منتقل کیا جائے گا۔جیل ہو یا پھانسی اب قدم نہیں رکیں گے، نواز شریفگذشتہ روز لندن میں ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے نواز شریف نے کہا کہ اب پردے ڈالنے کا وقت گزر گیا اور اٹھانے کا وقت آ گیا ہے۔ ڈور ہلانے والے لوگوں کے چہرے بے نقاب ہوں گے اور الیکشن میں نتائج حاصل کرنے والوں کے چہرے بھی سامنے آئیں گے۔ صبر و تحمل سے کام لیا لیکن اب مزید خاموش رہنا قوم کے ساتھ زیادتی ہوگی۔انہوں نے کہا کہ دنیا کے کئی ممالک کو کھنگالنے کے باوجود میرے خلاف فیصلے میں لکھنا پڑا کہ کرپشن کا کوئی ثبوت نہیں ملا اور لکھا گیا کہ نواز شریف کو کرپشن کے الزامات سے بری کیا جاتا ہے۔ویڈیودیکھنے کیلئے پلے کابٹن دبائیںلاہور ایئرپورٹ سے باہر جائیں گے کارکنان سے خطاب بھی کریں گے، مریم نوازدس جولائی کو ہارلے اسٹریٹ آمد پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مریم نواز نے کہا کہ عوام اصل حقیقت جانتے ہیں،ستر سال سے لڑائی جاری تھی، اب اس کے اختتام کا وقت آگیا ہے،مریم نواز نے کہا کہ گرفتاری جیسے ہتھکنڈوں سے ہمارے ارادے متزلزل نہیں ہوں گے، سازش کے منصوبہ سازوں کو پتہ ہے کہ نوازشریف کو عوامی حمایت حاصل ہے۔ نوازشریف عوامی طاقت سے وقت کا رخ موڑ سکتے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ مخالفین نے دباؤ کے تمام حربے استعمال کرلیے۔ نوازشریف کو عوام سے دور رکھنا ایک سطحی سوچ ہے۔ مخالفین جو حاصل کرنا چاہتے ہیں نتائج اس کے برعکس آرہے ہیں۔دس جولائی کو ماڈل ٹاؤن میں پریس کانفرنس کے دوران ترجمان (ن) لیگ مریم اورنگ زیب نے کہا نواز شریف اور مریم نواز کی وطن واپسی جمہوریت کے لئے نیک شگون ثابت ہوگی اور ملکی سیاست کا رُخ بدل جائے گا، تیرہ جولائی کو سب ایک جگہ اکٹھے ہوں گے ، ریلی کی قیادت شہباز شریف کریں گے، استقبال کے لئے ایسا منظر ہوگا کہ لوگ خود بخود بڑی تعداد میں آئیں گے جبکہ عملی جامہ پچیس جولائی کو پہنایا جائے گا۔
 

Watch Live News

 مزید خبریں 
« مزید خبریں

Comments & Reviews

ik wariiiii ferrrrr sherrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrr mian sab qadam bhrao ham ap k sath han
muhanmmad amir, lahore Jul 13, 2018

Post Your Comments
Select Language: