فلمی صنعت سے بحران کے بادل چھٹنے لگے

14 Sep, 2018 روزنامہ اوصاف
کراچی (روزنامہ اوصاف )کئی برس سے بحران میں مبتلا پاکستانی فلم انڈسٹری اب ٹی وی فنکاروں و ہدایتکاروں کی خصوصی توجہ کی بنا پر استحکام پانے میں کامیاب ہوگئی۔ سوشل میڈیا پر لالی ووڈ کی جاری کردہ سالانہ باکس آفس رپورٹ کے مطابق 2013 سے رواں برس کے دوران اب تک ریلیز ہونیوالی صرف 18 پاکستانی فلموں نے 760 کروڑ سے زائد کا بزنس کرلیا ہے ۔ملکی فلموں کے بڑھتے ہوئے بزنس میں دن بدن اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے جس میں سب سے بڑا اہم کردار جدید سینما گھروں کا ہے جس میں اب ملک گیر سطح پر اضافہ ہو رہا ہے ۔ پاکستانی فلموں کے سالانہ بزنس پر نظر ڈالی جائے تو 2013 کے دوران شان اور عائشہ خان کی فلم وار نے 23 کروڑ کا ریکارڈ ساز بزنس کرکے انڈسٹری میں جان ڈال دی ،اس برس میں ہوں شاہد آفریدی و دیگر فلموں نے مجموعی طورپر سالانہ 60 کروڑ روپے کا بزنس کیا ، 2014 میں نامعلوم افراد ، آپریشن 021 و دیگر فلموں کا سالانہ مجموعی بزنس 45 کروڑ رہا۔ --> 2015 میں زیادہ فلمیں نمائش پذیر ہوئیں جن میں ماہرہ خان ، ہمایوں سعید کی فلم بن روئے 13کروڑ 55 لاکھ، ژالے سرحدی کی فلم جلیبی 10 کروڑ 50 لاکھ ، پہلی کارٹون اینی میٹڈ فیچر فلم تین بہادر 6 کروڑ 65 لاکھ، رانگ نمبر 6 کروڑ 75 لاکھ جبکہ دیگر کا سالانہ مجموعی بزنس 110 کروڑ ہوا جو ایک نیا بزنس ریکارڈ تھا ۔2016 کے دوران ریلیز شدہ فلموں کے بزنس میں مزید اضافہ ہوا جو 177 کروڑ سے زائد ہوگیا۔ اس برس مہوش حیات ، فہد مصطفی کی فلم ایکٹر ان لا نے 24 کروڑ ، آرمینہ رانا خان اور بلال اشرف کی فلم جانان نے 17 کروڑ 50 لاکھ، ماہرہ خان اور شہر یار منور کی فلم ہومن جہاں نے 16 کروڑ 25 لاکھ ، صنم سعید اور محب مرزا کی فلم بچانا نے 10 کروڑ ، صبا قمر اور یاسرحسین کی فلم لاہور سے آگے نے 9 کروڑ سے زائد کا بزنس کیا ۔
 

Watch Live News

 مزید خبریں 
« مزید خبریں
Post Your Comments
Select Language: