میشاشفیع سپریم کورٹ سے بڑا ریلیف حاصل کرنے میں کامیاب

14 May, 2019 اب تک
میشاشفیع سپریم کورٹ سے بڑا ریلیف حاصل کرنے میں کامیاباسلام آباد:( 14 مئی 2019) سپریم کورٹ نے گلوکارہ میشاشفیع کی درخواست پر گواہان پر بیان کے فوری بعد جرح کرنے کا لاہور ہائیکورٹ کا حکم کالعدم قرار دیدیا ہے جبکہ عدالت نے میشاشفیع اورعلی ظفر کو غیرضروری درخواستیں دائرکرنے سے روک دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں گلوکارہ میشاشفیع کیس کی درخواست پر سماعت جسٹس مشیر عالم کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے کی، دوران سماعت میشا شفیع کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ میشاشفیع گلوکارعلی ظفرکے گواہوں کونہیں جانتی،کیونکہ گواہان میں علی ظفرکے ملازمین شامل ہیں۔

جس پر وکیل علی ظفر نے کہا کہ کوئی گواہ علی ظفرکاملازم نہیں، اس پر عدالت نے استفسار کیا کہ علی ظفرکامیشاشفیع کی درخواست پربنیادی اعتراض کیاہے؟جس پر وکیل میشا شفیع نے کہا کہ گواہوں کی لسٹ مل جائے توایک روزمیں جرح کرلیں گے،عدالت نے کہا کہ ایک ہی روزگواہوں پرجرح مکمل کرنے کی کوشش کی جائے۔میشاشفیع کے وکیل نے کہا کہ قانون کے مطابق گواہ کابیان اورجرح ایک ہی روزہوتی ہے،جس پر جسٹس فائز عیسیٰ نے کہا کہ بیان اورجرح ایک ہی روزہونےکااختیارعدالت کا ہے۔

بعد ازاں سپریم کورٹ نے گواہان پر بیان کے فوری بعد جرح کرنے کا ہائیکورٹ کا حکم کالعدم قرار دیا، عدالت نے علی ظفر کو سات روز میں گواہان کے بیان حلفی جمع کرانے کا حکم بھی دیا جبکہ میشا شفیع کے وکیل کو گواہان پر جرح کی تیاری سات روز میں مکمل کر نے کی ہدایت کی۔

اس کے علاوہ سپریم کورٹ نے میشا شفیع اور علی ظفر کو غیر ضروری درخواستیں دائر کرنے سے روکتے ہوئے میشا شفیع کی درخواست نمٹا دی۔


WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels
 
« مزید خبریں