آوارہ ہوں رین بسیرا کوئی نہیں میرا

Poet: Anwar Shaoor
By: Obaid, khi

آوارہ ہوں رین بسیرا کوئی نہیں میرا
گلی گلی کرتا ہوں پھیرا کوئی نہیں میرا

تیری آس پہ جیتا تھا میں وہ بھی ختم ہوئی
اب دنیا میں کون ہے میرا کوئی نہیں میرا

تیرے بجائے کون تھا میرا پہلے بھی پھر بھی
جب سے ساتھ چھٹا ہے تیرا کوئی نہیں میرا

جب بھی چاند سے چہرے دیکھے بھیگ گئیں پلکیں
پھیل گیا ہر سمت اندھیرا کوئی نہیں میرا

عجب نہیں کوئی لہر اٹھے جو پار لگا دے ناؤ
درد کی دھن میں گائے مچھیرا کوئی نہیں میرا

کوئی مسافر ہی رک جائے پل دو پل کے لیے
مدت سے ویران ہے ڈیرا کوئی نہیں میرا

میں نے قدر تیرگیٔ شب اب پہچانی جب
گزر گئی شب ہوا سویرا کوئی نہیں میرا

کوئی نہیں ہے جس کے ہاتھوں زہر پیوں مر جاؤں
بین بجائے جائے سپیرا کوئی نہیں میرا

Rate it:
Views: 47

More Anwar Shaoor Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

Email
29 Dec, 2016
About the Author: owais mirza
Visit Other Poetries by owais mirza »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Anwar Shaoor was the poet, he wrote various collections of Sad Ghazal. Here I like this 'Awara hun' in which I especially like the way when he use 'Koi Nahi Mera'.

By: rahim, khi on Nov, 21 2018

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City