میں پریم روگی مجھے لاگ لپیٹ سے کام بھلا کیا؟
Poet: رعنا تبسم پاشا
By: Rana Tabassum Pasha(Daur), Dallas, USA

دیس بدیس در بدر دل کے داغ چھپائے پھروں
آنکھ کے سُونے درپن میں آس کی جوت جگائے پھروں

ٹوٹ گئی خوشیوں کی مالا بکھرے موتی کیسے سمیٹوں
ہار کے غم کی بازی میں موت کو گلے لگائے پھروں

تیرے روپ کی برکھا نے کتنے ہی دل سلگائے ہیں
میں پُروا کا پہلا جھونکا بن کر تجھ کو ساتھ اڑائے پھروں

جگ کی اندھیری راہوں میں جگنو بن کر چمکے جاؤں
جفا پرستوں کی محفل میں وفا کی شمع جلائے پھروں

میں پریم روگی مجھے لاگ لپیٹ سے کام بھلا کیا؟
تُو کلیوں جیسی کومل کنیا آخر کتنا خود کو بچائے پھروں؟

اِدھر بھی ہو نظر کرم رعنا! میں در تیرے سے لوٹوں تو
اِک عالم سرشاری میں یہ زمیں سر پہ اٹھائے پھروں

Rate it: Views: 2 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 08 Aug, 2018
About the Author: Rana Tabassum Pasha(Daur)

Visit 50 Other Poetries by Rana Tabassum Pasha(Daur) »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
boht khoob
dil ko chhu jany wala klam takhleeq kia hai
good luck be happy and stay blessed
By: uzma, Lahore on Aug, 09 2018
Reply Reply to this Comment
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.