اقرارِ وفا
Poet: Syed Zulfiqar Haider
By: Syed Zulfiqar Haider, Gujranwala (Pakistan) ; Nizwa (Oman)

تیرے روبرو جو کہہ نہیں پاۓ بس سوچ ہی پاۓ
اک وہ بات بھی ہے ہونٹوں پر اپنے جو ہم نہیں لاۓ
خواہش تو ہے تم سے اقرارِ وفا کروں
تیرے انکار کے ڈر سے مگر اظہار کر نہیں پاۓ

کئی بار تجھ کو دل کا حال سنانا چاہا
دل میں ہے جو ہونٹوں کی زبان سے کہنا چاہا
اگرچہ جانے میری تڑپ کو بے قراری کو سمجھے
مسکرا کر بغیر کچھ کہے تڑپاتی ہوئی چلی جاۓ

جاگے جاگے سے کٹتی ہے رات آج کل
کروٹیں بدلتی کرب میں گزرے رات آج کل
سونا چاہوں اگرچہ سو نا پاؤں آج کل
صورت تیری نگاہوں میں ہے نیند آنکھوں میں پھر کیسے آۓ

میرے ساتھ ہو تو موسم دل کا سہانا ہو جاۓ
ساون کی گھٹا اُمنڈ آۓ تپشِ زمانہ دور ہو جاۓ
اک بار اگر مجھ سے چاہت کا وہ اقرار کر دے
شام سے سحر لوٹ آۓ زندگی سہل ہو جاۓ
 

Rate it: Views: 2 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 10 Oct, 2018
About the Author: Syed Zulfiqar Haider

Visit 40 Other Poetries by Syed Zulfiqar Haider »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.