ٰیہاں ہر کسی کی کرسی ۔۔۔۔۔
Poet: m.asghar mirpuri
By: m.asghar mirpuri, birmingham

یہاں ہر کسی کی کرسی ادھاری ہے
آج تم ہو تو کل کسی اور کی باری ہے

ابھی تو لوٹے ہیں تیری چاپلوسی کے لیے
اسی لیے تجھےشہرت کی خماری ہے

طاقت پہ غرور کرنے سے پہلے سوچ لینا
یہ دنیا تو چڑھتے سورج کی پجاری ہے

جانے کے بعد کوئی کسی کویاد نہیں کرتا
اس بات کو جانتی یہ دنیا ساری ہے

میری باتیں اس لیے انہیں بری لگتی ہیں
کہ ان کے ذہن پہ غرور کا نشہ طاری ہے

یہاں بڑے بڑے فرعون آکر چل دیے
پھر سوچو کے کیا اوقات تمہاری ہے

اصغر کی باتوں پہ ٹھنڈے ذہن سے غور کرنا
تمہارے لیے فقط اتنی رائے ہماری ہے

Rate it: Views: 0 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 05 Dec, 2018
About the Author: m.asghar mirpuri

Visit 7397 Other Poetries by m.asghar mirpuri »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.