ہوش میں رہتے خبر رہتی

Poet: راشد قیوم انصر
By: راشد قیوم انصر, Pakpattan Shareef

ہوش میں رہتے، خبر رہتی مگر اس عشق میں
میری شاہی بھی گئی اور راجدھانی بھی گئی

جستجو میں تیری چلتے چلتے مَیں اتنا چلا،
عمر بیتی اور میری یہ جوانی بھی گئی

مرکزی کردار تھا میری کہانی کا وہ شخص
وہ گیا اور ساتھ ہی اُس کے کہانی بھی گئی

ہم نے یعقوب کی سنت نبھائی ہے کہ ہم
اِس قدر روئے کہ اشکوں کی روانی بھی گئی،

زندگی نے آج سب کو اس قدر الجھا دیا
وہ تکلف بھی گیا وہ میزبانی بھی گئی

Rate it:
07 Feb, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: راشد قیوم انصر
Visit 6 Other Poetries by راشد قیوم انصر »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City