ہر خوشی تیرے نام کی میں نے
Poet: راشد انصر
By: راشد قیوم انصر, Pakpattan Shareef

ہر خوشی تیرے نام کی, میں نے
وار دی تجھ پہ زندگی میں نے

اک پیادے نے مات شَہہ کو دی
چال ایسی بھی اک چلی میں نے

وقت بھی مختصر تھا اُس کے پاس
بات بھی مختصر سی کی میں نے

جو خلوص و وفا کے پیکر ہیں
کم ہی دیکھے ہیں آدمی میں نے

آنکھ نے جب کبھی بغاوت کی
تیری تصویر دیکھ لی میں نے

کاش پوچھے کبھی مجھے آ کر
چھوڑ دی کیوں تری گلی میں نے

صبح ضوریز پوچھتی ہے مجھے
کس طرح شب گزار دی میں نے

مجھ کو ثروت کی یاد آئی ہے
ریل دیکھی ہے جب کبھی میں نے

اب مری لاش سے سوال کرو
کس طرح کی ہے خودکشی میں نے

میری چوکھٹ پہ غم چلا آیا
سونپ دی اس کو ہرخوشی میں نے

وصل کو خود پہ اوڑھ کے انصر
ہجر کی داستاں لکھی میں نے

Rate it: Views: 14 Post Comments
 PREV More Poetry NEXT 
 More Sad Poetry View all
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 07 Feb, 2019
About the Author: راشد قیوم انصر

Visit 6 Other Poetries by راشد قیوم انصر »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
I am not much fond of poetry but now a days I am in much love with it. I have been reading and
Memorizing it.
By: Daud, Lahore on Feb, 14 2019
Reply Reply to this Comment
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.