حق میری محبت کا ادا کیوں نہیں کرتے
Poet: پروفیسر ڈاکٹر مجیب ظفر انوار حمیدی
By: پروفیسر ڈاکٹر مجیب ظفر انوار حمیدی, کراچی

حق میری محبت کا ادا کیوں نہیں کرتے
تم درد تو دیتے ہو دوا کیوں نھیں کرتے

کیوں بیٹھے ہو خاموش سرہانے میرے آکر
یارو میرے جینے کی دعا کیوں نہیں کرتے

پھولوں کی طرح جسم ہے ، پتھر کی طرح دل
جانے یہ حسیں لوگ وفا کیوں نہیں کرتے

ہر بات پرندوں کی طرح اڑتی ہوئی سی
جو بات بھی کرتے ہو سدا کیوں نہیں کرتے

بس مل چکا ثواب بصورت ہمیں عذاب
اتنی وفا کے بعد جفا کیوں نہیں کرتے

زاہد ہی کہہ رہا تھا پلا کر ہمیں شراب
ممکن ثواب میں بھی خطا کیوں نہیں کرتے

لو دیکھو حمیدی لب دریا پہ ہے دریا
پر پیاس ہے کب کی یہ پتا کیوں نہیں کرتے

Rate it: Views: 347 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 22 Oct, 2012
About the Author: پروفیسر ڈاکٹر مجیب ظفر انوار حمیدی

Visit 14 Other Poetries by پروفیسر ڈاکٹر مجیب ظفر انوار حمیدی »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
so good
By: sahiba, s.k.p on Nov, 08 2014
Reply Reply to this Comment
انتہائی خوب صورت غزل ہے جو نظم کا مزا بھی دیتی ہے ، بلاشبہ پروفیسر ڈاکٹر مجیب ظفر انوار حمیدی صاحب اردو دنیا کے چند گنے چُنے ماہرین میں شامل ہیں ، اللہ ان کو سلامت رکھے اور مزید شہرت دے آمین
دعا زہرا رضوی
By: سیدہ دعا رضوی, راول پنڈی on Apr, 26 2013
Reply Reply to this Comment
اس صدی کے سب سے مقبول شاعر ، جس کی شاعری دلوں کو چھولیتی ہے اور دل اس کی شاعری ، بولوں ، مصرعوں کی تال پر لب کشا ہوجاتے ہیں ، بے شک مجیب ظفر انوار حمیدی ہے کہ جو بہت برا انسان اور بہت بڑا شاعر ادیب اور معلم ہے۔
By: Rafia Sadiq, London on Feb, 17 2013
Reply Reply to this Comment
اس صدی کے سب سے مقبول شاعر ، جس کی شاعری دلوں کو چھولیتی ہے اور دل اس کی شاعری ، بولوں ، مصرعوں کی تال پر لب کشا ہوجاتے ہیں ، بے شک مجیب ظفر انوار حمیدی ہے کہ جو بہت برا انسان اور بہت بڑا شاعر ادیب اور معلم ہے۔ہم للہ کے شکر گذار ہیں کہ دورِ مجیب حمیدی ہمارا متنفس بھی ہے ، سلمان فاروقی ، دہلی ،گھٹا مسجد روڈ
By: Dr Salman Farooqi, ، دہلی ،گھٹا مسجد روڈ on Jan, 04 2013
Reply Reply to this Comment
Exellent poetry,Sounds of our hearts Thanks Dr sb :)
By: Qalandar Khan , Madina on Dec, 21 2012
Reply Reply to this Comment
Excellent Poetry .In Fact a real heart tiuching poetry and words also.....Nice very nice !
By: shoaibmirza, Lahore on Nov, 23 2012
Reply Reply to this Comment
Excellent and awesome poetry of Dr mujeeb Zafar Anwar hameedi sb
Khizar
By: Kaify Khizar, Toronto(Canada) on Nov, 04 2012
Reply Reply to this Comment
V nice.Best Poetry for Love:)
By: Noor Mohammad, Larkana on Nov, 02 2012
Reply Reply to this Comment
Excellent....
By: Prof Rafiq Ahmed, Karachi on Oct, 31 2012
Reply Reply to this Comment
V nice
By: stive alert, Canada on Oct, 30 2012
Reply Reply to this Comment
very awesome poetry with deep passion of heart and soul.
Thank you Hamari Web team.
Dr Akhter Ali
By: Dr Syed Akhter Ali, London on Oct, 28 2012
Reply Reply to this Comment
واہ۔۔۔کیا بات ہے ۔ زندگی کا انوکھا اور تازہ دم پیغام موجود ہے ، مصرعہ ملاحظہ فرمائیے۔۔۔
یارو میرے جینے کی دعا کیوں نہیں کرتے۔۔۔حالانکہ یارو میرے مرنے کی دعا بھی ہو سکتا تھا لیکن محترم پروفیسر ڈاکٹر سید مجیب ظفر حمیدی انوار صاحب نے زندگی سے زندگی کو کشید کرتے ہوئے کیا مقبول شاعری فرمائی ہے ۔ مزا آگیا۔اتنے عرصے بعد ایسی بھرپور غزل پڑھی ہے ۔ جزاک اللہ ڈاکٹر صاحب ، بہت شکریہ ہماری ویب کی ٹیم کا ، بہت نوازش۔۔۔
By: ڈاکٹر ثنا مرزا, Canada on Oct, 24 2012
Reply Reply to this Comment
Veryyyyyyyyyyyyyyyyyyyyyyyyyyyyyyyyyyyyyyy nice
By: Khalidhussain, Daharki on Oct, 23 2012
Reply Reply to this Comment
wah wahpar pyaas hey kab ki , ye pata kion nhai kartey
wah wah
Karbala ki pyaas ki Talmeeh hey wah wah...marhaba
By: waqas zaidi, London on Oct, 22 2012
Reply Reply to this Comment
wah...wah....Tum dard to detey ho..dawa kion nahi kartey..wah wah..kia baat hey
Shukria Proff Mujeeb Zafar Anwar hameedi sb....Nice poetry...
Tahir
By: Tahir Maqsood, Covina , California U.S.A urdu blogs on Oct, 22 2012
Reply Reply to this Comment
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.