کیوں خیالوں میں مرے پاس چلے آتے ہو
Poet: Sara Afzal
By: Sara Afzal, Pakistan

کیوں خیالوں میں مرے پاس چلے آتے ہو
تم کو معلوم نہیں روح کو تڑپاتے ہو

تم کو چاہا ہے تو ہر شے کو بھلا ڈالا ہے
پھر بھی کیوں پیار میں تم جان جلا جاتے ہو

تھام لو ہاتھ مرا مجھکو بنا لو اپنا
کیوں کسی اور کو تم زیست میں اپناتے ہو

دیکھ لو آ کے یہ بے خواب سی میری راتیں
تم سکوں میں ہو ہر اک رات کو سو جاتے ہو

دور ہوں دل کی کہانی کو سناؤں کیسے
دل کسی اور کا تم کس لئے بہلاتے ہو

تم کو سارہ نے بہت پیار کیا ہے سن لو
پھر بھی ہر لمحہ ستم مجھ پہ ہی کیوں ڈھاتے ہو

Rate it: Views: 138 Post Comments
 PREV More Poetry NEXT 
 More Love / Romantic Poetry View all
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 21 Aug, 2014
About the Author: Sara Afzal

Visit 46 Other Poetries by Sara Afzal »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
یہ غم سوز کی جگہ اے رخ
یہاں طلوع طرب ممکن نہیں
By: Marrukh, Abbotabad on Jan, 27 2019
Reply Reply to this Comment
sooperb
By: Jawed, Islamabad on Jan, 24 2019
Reply Reply to this Comment
You are doing a good job. Keep it up. Good Luck
By: Sajjad Afzal, Calgary Canada on Sep, 30 2014
Reply Reply to this Comment
Thank you Sajjad sahib.Be happy
By: Sara Afzal, Pakistan on Oct, 02 2014
بے حد شکریہ مائی سویٹ سسٹر آپ کی حوصلہ افزائی سے بہت خوشی ہوئی ہمیشہ خوش رہیں
By: Sara Afzal, Pakistan on Sep, 06 2014
Reply Reply to this Comment
ماشاءاللہ
بہت حسی ن کلام تخلیق کیا ہے آپ نے سارہ
ہر شعر ایک سے بڑھ کر ایک اور ہر خیال لاجواب
اس رومانویت سے بھرپور غزل کے لئے
داد کے تازہ گلاب
اور
بے شمار دعائیں
حاضر ہیں۔۔۔
خوش رہیں۔۔
By: Azra Naz, Reading UK on Sep, 06 2014
Reply Reply to this Comment
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.