اتنی سج دھج کے یہ بارات ہماری نکلے
Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

اتنی سج دھج کے یہ بارات ہماری نکلے
جیسے چاہت کی کوئی راج کماری نکلے

ہم نے جاں اپنی ہتھیلی پہ یہاں پیش بھی کی
لیک وہ لوگ تو الفت کے شکاری نکلے

میں تو سمجھی تھی کوئی اور ہے اپنا دشمن
"میرے قاتل تو مرے اپنے حواری نکلے"

اپنے اشکوں کی یہ سوغات نہ بھیجو مجھ کو
کوئی قربت تو مرے ساتھ تمہاری نکلے

ایک تارے سے اجالا تو نہیں ہو سکتا
چاند کے ساتھ اگر فوج نہ ساری نکلے

کل بھی مشکل تھی مری جان تری دیدہ وری
آج بھی آنکھ سے بس اشک ہی جاری نکلے

میری بے چین نگاہوں کے تھے آنسو وشمہ
چند قطرے جو سمندر پہ ہیں بھاری نکلے

Rate it: Views: 18 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 18 Dec, 2017
About the Author: washma khan washma

I am honest loyal.. View More

Visit 4344 Other Poetries by washma khan washma »
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.