ہونٹوں پہ سجا کر یوں مسکان نکلتے ہیں
Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

ہونٹوں پہ سجا کر یوں مسکان نکلتے ہیں
یہ درد تو آنکھوں سے ہر آن نکلتے ہیں

آتے ہیں تجھے ملنے ، ہوتے ہیں جواں لیکن
پھر شہر سے نکلیں تو بے جان نکلتے ہیں

اب بھولنا چاہوں تو دل بھول نہیں پاتا
سب سوئے ہوئے میرے ارمان نکلتے ہیں

اس شہرِ تمنا میں دل خون ہوا میرا
یہ یاد کے ہر سو جو طوفان نکلتے ہیں

وہ درد کی صورت ہی مرے دل میں مچلتا ہے
جب خواہشِ ہستی کے سامان نکلتے ہیں

ماحول تو چہرے کا غربت نے بگاڑا ہے
کیوں دل سے محبت کے سلطان نکلتے ہیں

اب تو ہی بتا وشمہ کیسے میں انہیں روکوں
اس کہر میں آنکھوں سے مرجان نکلتے ہیں

Rate it: Views: 4 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 08 Jan, 2018
About the Author: washma khan washma

I am honest loyal.. View More

Visit 4344 Other Poetries by washma khan washma »
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.