اب اپنے وطن سے ہم ایران نکلتے ہیں
Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

چل ہو کے محبت میں یک جان نکلتے ہیں
اب اپنے وطن سے ہم ایران نکلتے ہیں

تہران کے بارڈر سے لیتے ہیں کوئی کشتی
پھر اس کی رفاقت میں جاپان نکلتے ہیں

کشمیر کی وادی کے دیکھے ہیں کئی منظر
اب دل کی یہ خواہش ہے کاغان نکلتے ہیں

ہے دیس محبت کا ، خوشیوں کا جو گہوارہ
کچھ روز چلو مل کر عمان نکلتے ہیں

اب قطر کے آگے کیا لینا ہے تمہیں جا کر
واں بحر کے ساحل تک طوفان نکلتے ہیں

اے کاش مجھے وشمہ مل جائے وہ شہزادہ
ہم جس کی تمنا میں پرستان نکلتے ہیں

Rate it: Views: 9 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 08 Jan, 2018
About the Author: washma khan washma

I am honest loyal.. View More

Visit 4344 Other Poetries by washma khan washma »
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.