بے وفائی جب مقدر بن کے چمکے چار سو
Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

کردیا سودا میرے ہر خواب کی تعبیر کا
گردش دوراں نے میرے پیار کی تفسیر کا

بے وفائی جب مقدر بن کے چمکے چار سو
بے اثر ہر لفظ ہوگا عشق کی تحرہر کا

یہ اندھیرے قلب کو تسکین دیتے ہیں میرے
اس لیے احسان لوں کیوں بے وجہ تنویر کا

بے وفائی سہہ کہ یہی زندہ ہوں یارو اس سے
جان سے پیارا ہے مجھ کو فیصلہ تقدیر کا

یہ تخیل مار ڈالے نہ کہیں وشمہ تجھے
ڈال دے تو قفل کوئی پیار کی زنجیر کا

Rate it: Views: 0 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 09 Mar, 2018
About the Author: washma khan washma

I am honest loyal.. View More

Visit 4379 Other Poetries by washma khan washma »
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.