جب بھی اس کا سلام ہوجائے
Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

جب بھی اس کا سلام ہوجائے
خوشبو سے یہ کلام ہوجائے

حاجتوں کا پتہ نہیں ہے
آرزوئیں تمام ہوجائے

بیتے لمحات کی صدائیں
جب بھی تیرا پیام ہوجائے

شعر بے ساختہ اتر آئے
پھر سے مشکل مقام ہوجائے

دہر میں یوں چلی ہوائے
شب کی زلفوں کی شام ہوجائے
جو ہوا پر پیام ہوجائے

دل کے صحرا میں کھو گئے ہیں
دل پہ یوں اس کا نام ہوجائے

پیاس وہ بھی بجھا سکا نا
اسکی آنکھوں کا جام ہوجائے

تجھ کو وشمہ منا لوں شاہد
پھر یہ دل کا غلام ہوجائے

Rate it: Views: 6 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 14 Apr, 2018
About the Author: washma khan washma

I am honest loyal.. View More

Visit 4383 Other Poetries by washma khan washma »
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.