بہت زرخیز تھی میرے دل کی زمیں
Poet: رعنا تبسم پاشا
By: Rana Tabassum Pasha(Daur), Dallas, USA

پھول جب دل میں کھلتے ہیں تو منہ سے جھڑتے ہیں
جب دل میں آگ لگی ہو تو
زبان بھی انگارے برساتی ہے
آگ تنہائی کی ہو، جدائی کی ہو
یا کسی کی بےوفائی کی ہو
آگ آگ ہوتی ہے ، اِک زہریلا ناگ ہوتی ہے
بہت زرخیز تھی میرے دل کی زمیں
اس پر دھرے جانے والے قدم تھے سبز
مجھے دور تک کر ڈالا بنجر
نارسائی کے شعلے کر گئے بھسم
جو زمین آگ پی جاتی ہے پھر وہاں کبھی پھول نہیں کھلتے
اس کی کوکھ میں پھوٹنے والی ہر کونپل
جل کر راکھ ہو جاتی ہے
زندگی رزقِ خاک ہو جاتی ہے

Rate it: Views: 6 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 15 May, 2018
About the Author: Rana Tabassum Pasha(Daur)

Visit 53 Other Poetries by Rana Tabassum Pasha(Daur) »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.