محبت اور بڑھتی ہے

Poet: Syed Zulfiqar Haider
By: Syed Zulfiqar Haider, Dist. Gujranwala ; Nizwa, Oman

محبت میں آزمانے سے محبت اور بڑھتی ہے
چوٹ کھا کر مُسکرانے سے محبت اور بڑھتی ہے

کیسے بتایئں اُسے وہ جو ہم سے آشنا ہی نہیں
دیکھ کر چہرہ چھپانے سے محبت اور بڑھتی ہے

جانتے ہوےَ بھی اجنبی کی طرح پیش آتے ہیں
شاید جانتے نہیں حقیقت چھپانے سے محبت اور بڑھتی ہے

کہیں نا اب چین پاےَ بے قراری بڑھتی جاےَ
کسی کے یوں بے قرار رہنے سے محبت اور بڑھتی ہے

دیوانہ اپنا بنا کر اب مجھ سے انجان ہے
انتظار دے کر جلانے سے محبت اور بڑھتی ہے

کاش جان جائیں وہ اس حقیقت کو
بے وجہ کسی کو ستانے سے محبت اور بڑھتی ہے

خیالوں میں کھوےَ رہتے ہیں شاید اب بھی نا آشنا ہیں
خوابوں میں کسی کے آنے سے محبت اور بڑھتی ہے

Rate it:
15 Oct, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Syed Zulfiqar Haider
Visit 50 Other Poetries by Syed Zulfiqar Haider »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City