غم کیسا آیا

Poet: Syed Zulfiqar Haider
By: Syed Zulfiqar Haider, Dist. Gujranwala ; Nizwa, Oman

یہ غم کیسا آیا میری آنکھوں میں جو نم لایا
چاہت میں یہ پُر خطر موڑ پر کیوں آیا
ملنے سے پہلے ہی اس قدر کیوں دور ہو گےَ
ہماری ملاقات میں اس قدر فاصلہ کیوں حائل آیا

ہیں جسم الگ ہمارے پر روح تو الگ نہیں
فاصلہ ہے اگرچہ درمیان پر دل تو دور نہیں
میری پلکیں نم ہیں لیکن دل تو نااُمید نہیں
دیدار ہونے سے پہلے جُدائی کا موسم پھر کیوں اُمنڈ آیا

تیری صورت روشنی کی طرح میری آنکھوں میں بسی ہے
میرے لاغر جسم میں تجھ سے ملنے کی خواہش ہی زندگی ہے
راستے پر نظریں لگائے کھڑا ہوں کبھی تو پیار کی گھٹا چھائے گی
ملنے سے پہلے ہی بچھڑنے کا موسم پھر کیوں میرے دلدار آیا

لگتا ہے آرام کی نیند اب تو میری قسمت میں ہی نہیں
چل دوں گا دنیا سے تیرے ملنے سے پہلے ہی
تیری جُدائی کا زہر پینے کی اب میرے جسم میں سکت ہی نہیں
ذوالفقار زندگی کی شمع بجھنے پر اُن کا خیال پھر کیوں آیا

Rate it:
15 Oct, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Syed Zulfiqar Haider
Visit 50 Other Poetries by Syed Zulfiqar Haider »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City