پھر ملاقات کی جیسے کہ بیاں سے آئی

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

پھر ملاقات کی جیسے کہ بیاں سے آئی
دل میں یوں آن بسا، دید زماں سے آئی

شوخیاں بھول گئے عمر کے ڈھلتے ڈھلتے
آنکھ میں ناچتی معصوم بتاں سے آئی

موت کا رقص ہے افسردگیٔ جاں کا علاج
جل بجھی شمع تو پروانے تپاں سے آئی

کوئی اس درد کے رشتے کو نبھائے کیوں کر
چارہ سازی جو کرے وہ تو کہاں سے آئی

فاصلہ رکھیے دلوں میں مگر اتنا بھی نہیں
درمیاں جیسے یہ دیوار وہاں سے آئی

دیکھ کر شہر خرد کی یہ کشاکش وشمہ
دشت احساس کے ویرانےخزاں سے آئی

Rate it:
19 Oct, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4523 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City