اجالے ڈوب جائےکیا رہا ہے

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

قیامت کا کوئی حصہ رہا ہے
اجالے ڈوب جائےکیا رہا ہے

گرے گلیوں کے قدموں پر اندھیرا
فضا میں کوئی بھی جلتا رہا ہے

ہیں سطح بحر پر موجیں پریشاں
یہ جو دن ڈوبے تو پیاسا رہا ہے

ہزاروں رنگ پرچم سرنگوں ہیں
وہ ہم ہی تھے کہ جو اپنا رہا ہے

ہماری ابتدا مٹی میں اک راز
ہمارے واسطے قصہ رہا ہے

کہے کیا ہائے زخمِ دل ہمارا
تو ہم نے یاں نہ کچھ کھویا رہا ہے

کہیں ایسا نہ پائے گا نہ وشمہ
اسے ہم نے بہت ڈھونڈھا رہا ہے

Rate it:
26 Oct, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4523 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City