دَم لبوں کے کناروں میں ہے

Poet: Akhlaq Ahmed Khan
By: Akhlaq Ahmed Khan, Karachi

دَم لبوں کے کناروں میں ہے
جاں بس اب اشاروں میں ہے

صاحبِ قرآں مجھ کو قرآں سنا
کہ تسکین اب نہ نظاروں میں ہے

چھوٹ رہا ہے ایک ایک کرکے سبھی
عمل سہارا تو ہی سہاروں میں ہے

وقتِ رخصت گر ایماں نہ بچ سکا
یہ خصارہ بڑا سب خصاروں میں ہے

پڑا رہیگا اندھیری قبر میں اکیلا
گو آج لاکھوں میں ہے ہزاروں میں ہے

جو اچانک گیا جانے کیا لے گیا
کر ادا شکر کہ تو بیماروں میں ہے

اے نادان تو ابھی غفلت میں ہے
اور گماں ہے تجھے کہ بیداروں میں ہے

اخلاق فکرِ عالم میں خود کو نہ بھول
تو بھی تو آخر گنہگاروں میں ہے

Rate it:
28 Oct, 2018

More Religious Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Akhlaq Ahmed Khan
Visit 83 Other Poetries by Akhlaq Ahmed Khan »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City