اس دشتِ لا مکان پہ بادل اتر گیا

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

اس دشتِ لا مکان پہ بادل اتر گیا
میرے چمن کی سرخی و نکہت نکھر گیا

میں بھی اسی کی راہ پہ چل دوں گی ایک دن
پھیلا ہوا جو چار سو خوشبو میں بھر گیا

وہ درد جو کہ روح کو رکھتا ہے مضطرب
وہ میری اس حیات کو کیسے سنور گیا

یہ بے رخی ہے ، ہجر ہے یا ہے ادائے ناز
یہ سلسلے ہیں پیار کے سب کا اثر گیا

اس زندگی کو پھر سے ضرورت ہے پیار کی
اس کی محبتوں کا صنم پھر مکر گیا

میں سنگِ آستاں ہوں تو میرا خیال کر
اپنی انا کو میرے ہی قدموں میں مر گیا

مایوسیوں کی گود میں دم توڑ دوں گی میں
وشمہ وفا کا حوصلہ پھرسے کدھر گیا

Rate it:
13 Nov, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4523 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Very nice poem washma. Liked it!

By: Yuhu, Us on Nov, 15 2018

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City