یہ کیسی تمنا جگا بیٹھے

Poet: Sobiya Anmol
By: Sobiya Anmol, Lahore

یہ کیسی تمنا جگا بیٹھے
بے وفا سے آس لگا بیٹھے

ستانا تو نہ تھا دل کو
مگر آخر ہم ستا بیٹھے

اُس کو یاد کرتے کرتے
ساری دنیا کو بھلا بیٹھے

خطا سب سے بڑی ہو گئی
اُسے آنکھوں پہ بٹھا بیٹھے

وہ آئے یا نہ آئے مگر
ہم اُس کی سیج سجا بیٹھے

محبت کیا کرےٗ نہیں جانتے
ہم فسانۂ دل سنا بیٹھے

جس سے دنیا بھاگتی ہے
اُسی کونے میں جا بیٹھے

ستم یہ خود پر کر ڈالا
عمر بھر کا رونا رُلا بیٹھے

اب کیا وقعت رہے محبت کی
ہم دمن میں اُسے بُلا بیٹھے

ہم دل پہ قابو رکھے ہوئے تھے
وہ سامنے مگر آ بیٹھے

جہاں دنیا پیار میں تھی
باتوں میں ہم بھی جتا بیٹھے

وہ یوں دل میں اُتر گئے
دو آنسو نامِ محبت بہا بیٹھے

Rate it:
15 Nov, 2018

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: sobiya Anmol
what can I say,people can tell about me... View More
Visit 128 Other Poetries by sobiya Anmol »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City