اُس ظالم کا اگر ہمیں غم نہ ہوتا

Poet: Sobiya Anmol
By: sobiya Anmol, Lahore

اُس ظالم کا اگر ہمیں غم نہ ہوتا
تو لمحہ لمحہ یہ دل پُر نم نہ ہوتا

کاش مرتا رہتا ہم پہ ہماری طرح
دل کو بھایا ہوا بے رحم نہ ہوتا

رنگینیٔ اُلفت ہوتی اپنے چاروں سو
یہ جدائیاں نہ ہوتیں ٗ یہ سہم نہ ہوتا

اتنا نہ وہ ناواقف ہم سے ہوتا
راہِ محبت میں آ کے یہ ستم نہ ہوتا

جیتے رہتے ہم بھی لوگوں کی طرح
جینا مشکل ہو جاتا ٗ جینا ختم نہ ہوتا

حالات کہاں تک لے آئے ہمیں
فساد اتنا دلوں کے باہم نہ ہوتا

اُسے جانا تھا تو دھیرے دھیرے چلا جاتا
جو ہوا وہ کم سے کم یک دم نہ ہوتا

Rate it:
15 Nov, 2018

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: sobiya Anmol
what can I say,people can tell about me... View More
Visit 128 Other Poetries by sobiya Anmol »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City