عشق پر ہجر کا کیسا گماں نہیں کوئی

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

عشق پر ہجر کا کیسا گماں نہیں کوئی
یہ جو تیری آنکھوں میں رازداں نہیں کوئی

میرے دل کی خاطر تو یہ فسانۂ ہستی
زخم بے رفو سا ہے درد جاں نہیں کوئی

جب سے مجھ کو حاصل ہے تیرے قرب کی دولت
دل بھی بحر الفت میں اب گماں نہیں کوئی

شور حشر برپا ہے یا کہ شور تنہائی
ہیں بجھی بجھی آنکھیں داستاں نہیں کوئی


مجھ کو مل ہی جائے گی اک نہ ایک دن منزل
بس اسی توقع پر دل آستاں نہیں کوئی

کون ہے جو رکھتا ہے دوست اس قدر مجھ کو
اجنبی سی دنیا میں آشیاں نہیں کوئی

اے وشمہ نہ چھوڑے گا وہ مجھے دعا دینا
"دھوپ ہے قیامت کی، سائباں نہیں کوئی"

Rate it:
16 Nov, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4523 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City