مرے حساب میں آ کے دیکھ

Poet: ZIA ULLAH TAHIR
By: ZIA ULLAH TAHIR, Islamabad

مرے حساب میں آ کے دیکھ
مرے خواب میں آ کے دیکھ

کرتا ہوں تیرے ساتھ کیا
مرے عذاب میں آ کے دیکھ

بوسہء دہن تنگ کے واسطے
مرے شباب میں آ کے دیکھ

کچے گھڑے کو ساتھ لے کر
مرے چناب میں آ کے دیکھ

گزرتا ہے پانی سر سے کیسے
مرے سیلاب میں آ کے دیکھ

سات سمندروں سے گہرا ہو گا
مرے پایاب میں آ کے دیکھ

پرندے ہیں محو رقص کیسے
مرے تالاب میں آ کے دیکھ

کرتے ہیں اپنے سلوک کیسا
مرے احباب میں آ کے دیکھ

نظارہ سجدہ شکرانہ طاہر
مرے محراب میں آ کے دیکھ

Rate it:
22 Nov, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: ZIA ULLAH TAHIR
Visit 4 Other Poetries by ZIA ULLAH TAHIR »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City