ہوں گے کئی چاہنے والے ٗ ہم نہ ہوں گے

Poet: Sobiya Anmol
By: Sobiya Anmol, Lahore

ہوں گے کئی چاہنے والے ٗ ہم نہ ہوں گے
اب تیرے نصیب میں ستم نہ ہوں گے

نام ظلموں کا دیا میری اپنائیت کو تُو نے
میرے خلوص کے اب تجھے غم نہ ہوں گے

چھوڑ جاؤں گی میں تجھے تیرے حال پہ
مگر یاد رہے ٗ محبت کے پل ختم نہ ہوں گے

یہ اور بات ہے کہ تُو ساتھ نہ ہو گا
یہ اور بات ہے کہ وہ موسم نہ ہوں گے

جو کبھی جوڑے تھے نازوں سے ہم نے
وہ کھوئے ہوئے تعلق باہم نہ ہوں گے

کونہ ڈھونڈ لیں گے دنیا کا کوئی
جہاں محبت کے ریت رسم نہ ہوں گے

Rate it:
25 Nov, 2018

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: sobiya Anmol
what can I say,people can tell about me... View More
Visit 128 Other Poetries by sobiya Anmol »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City