اِس سے پہلے کہ زندگی سنگین ہو جائے

Poet: Sobiya Anmol
By: Sobiya Anmol, Lahore

اِس سے پہلے کہ زندگی سنگین ہو جائے
کہ ساری کی ساری نہ غمگین ہو جائے

کیوں نہ بھول جائیں سب خطاؤں کو
پھر ایک دوسرے پر یقین ہو جائے

ابرِ محبت ہو سر پہ چھایا ہوا ہر سُو
پیروں تلے بھروسۂ وفا زمین ہو جائے

لوٹ آؤ اگر ہاتھوں میں ہاتھ دے دو
تو زندگی پھر سے ایک بار حسین ہو جائے

جو خزاں ہے چھائی ہوئی وفاؤں پہ
اُتر جائے وفا سے ٗ رنگ رنگین ہو جائے

جاتی ہوئی سانسوں کو سانس آ جائے
کھوئے ہوئے اعتبار کو تسکین ہو جائے

روح سما جائے ایک دوسرے کے اندر
دل ایک دوسرے کے دل کا مکین ہو جائے

Rate it:
10 Dec, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: sobiya Anmol
what can I say,people can tell about me... View More
Visit 128 Other Poetries by sobiya Anmol »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City