یوں نہ کبھی محبت میں عداوت ہوتی

Poet: Sobiya Anmol
By: sobiya Anmol, Lahore

یوں نہ کبھی محبت میں عداوت ہوتی
کاش ایسی نہ میری قسمت ہوتی

محبت ہی میں رہ کر جیتی رہتی مَیں
محبت ہی سدا میری عبادت ہوتی

شرارتیں نہ اُس کی دل میں اُتری ہوتیں
تو کبھی نہ شروع یہ قیامت ہوتی

حوصلے محبت کے سدا ہوتے ہی رہتے
اندوہ و رنج ٗٗٗٗٗٗٗٗ الم کی گر یہ عنایت نہ ہوتی

وہ بھی مر جاتا اے کاش مجھ پر
اُسے بھی میرے پیار کی حسرت ہوتی

نہیں ٗ یہ تو بس رونا لکھ رہی ہوں
مر نہ جاتے گر اُس سے شکایت ہوتی

قطع تعلق وہیں پر خود سے کر دیتے
جہاں اُس سے شکایت حقیقت ہوتی

اُسے حالتِ ویران دکھانی تھی ہمیں
بے سکونی لکھنے سے گر فرصت ہوتی

Rate it:
12 Dec, 2018

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: sobiya Anmol
what can I say,people can tell about me... View More
Visit 128 Other Poetries by sobiya Anmol »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City