انکار

Poet: م الف ارشیؔ
By: Muhammad Arshad Qureshi (Arshi), Karachi

کوئی بھی یہاں صاحبِ کردار نہیں ہے
اک دوسرے کا کوئی بھی یاں یار نہیں ہے

اب تجھ کو کوئی راز بتایا نہیں جاتا
لیکن یہ مرا عجز ہے انکار نہیں ہے

اک بار بھی ملنے نہ کبھی اس نے بلایا
کہتے تھے کہ ملنا کوئی دشوار نہیں ہے

کیوں لوگ دیے جاتے ہیں دھوکے یہاں سب کو
اس شہر میں کوئی بھی وفا دار نہیں ہے

اطوار کی پستی میں ہی جو ڈوبا ہوا ہے
کہتے ہیں اسے لوگ وہ عیار نہیں ہے

اطوار پتا دیتے ہیں رہبر کے یہاں پر
اس قوم کا اچھا کوئی سردار نہیں ہے

تحریر سے تیری یہاں کچھ بھی نہیں بدلا
ارشیؔ کوئی اچھا تو قلم کار نہیں ہے
 

Rate it:
15 Dec, 2018

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Muhammad Arshad Qureshi
My name is Muhammad Arshad Qureshi (Arshi) belong to Karachi Pakistan I am
Freelance Journalist, Columnist, Blogger and Poet.​President of Internati
.. View More
Visit 180 Other Poetries by Muhammad Arshad Qureshi »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City