کَٹ جائے گی مختصر ہی تو ہے

Poet: اخلاق احمد خان
By: Akhlaq Ahmed Khan, Karachi

کَٹ جائے گی مختصر ہی تو ہے
زندگی اک سفر ہی تو ہے

کہیں تو ہوگا اختتام اس کا
غم بھی اک ڈگر ہی تو ہے

جہاں چھوڑ گئے تھے تم مجھ کو
دیکھو زندگی اٗدھر ہی تو ہے

تم یاد ہو اور کچھ یاد نہیں
یہ تمہاری یاد کا اثر ہی تو ہے

اِس وجود کا اختیار ہے صرف دل کو
اور اختیار تمہارا دل پر ہی تو ہے

کیوں کان دھروں افواہوں پر
تیری بے وفائی اک خبر ہی تو ہے

جو ہر غم کو پناہ دیتا ہے اخلاق
وہ سینے میں اک جگر ہی تو ہے

Rate it:
07 Jan, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Akhlaq Ahmed Khan
Visit 81 Other Poetries by Akhlaq Ahmed Khan »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City