سچ تو یہ ہے کہ مرے سر کی بدولت کی ہے

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

یہ جو ہر سمت ترے بزم کی شہرت کی ہے
سچ تو یہ ہے کہ مرے سر کی بدولت کی ہے

ایسے موسم میں وہ چپ چاپ نظر جو آیا
اس نے آنکھو ں سے کوئی شکایت کی ہے

میں نے جو چیز گنوا دی اسے ہیرا کہہ کے
کسی نادار مسافر نےعنایت کی ہے

اس کو لفظوں میں اتاروں تو ورق ہوں روشن
اس کی تصویر بنا لوں تو محبت کی ہے

اے مرے پاؤں کے چھالو مرے ہمراہ رہو
امتحاں سخت ہے ہم نے بھی وکالت کی ہے

میری تاریک شبوں میں ہے اجالا ان سے
چاند سے زخموں پہ مرہم کی رفاقت کی ہے

اس سے جب عہد وفا کر ہی لیا اے وشمہ
بے وفا کہہ کے اسے اشک ندامت کی ہے

Rate it:
27 Jan, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4523 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City