بشارت ہو کہ اب مجھ سا کوئی پاگل نہ آئے گا

Poet: Anwar Shaoor
By: imran, khi

بشارت ہو کہ اب مجھ سا کوئی پاگل نہ آئے گا
یہ دور آخر دیوانگی ہے بیت جائے گا

کسی کی زندگی ضائع نہ ہوگی اب محبت میں
کوئی دھوکا نہ دے گا اب کوئی دھوکا نہ کھائے گا

نہ اب اترے گا قدسی کوئی انسانوں کی بستی پر
نہ اب جنگل میں چرواہا کوئی بھیڑیں چرائے گا

گروہ ابن آدم لاکھ بھٹکے لاکھ سر پٹکے
اب اس اندر سے کوئی راستہ باہر نہ جائے گا

بشر کو دیکھ کر بے انتہا افسوس آتا ہے
نہ معلوم اس خراباتی کو کس دن ہوش آئے گا

مٹا بھی دے مجھے اب اے مصور! تا بہ کے آخر
بنائے گا بگاڑے گا بگاڑے گا بنائے گا

محبت بھی کہیں اے دوست! تردیدوں سے چھپتی ہے
کسے قائل کرے گا تو کسے باور کرائے گا

غنیمت جان اگر دو بول بھی کانوں میں پڑ جائیں
کہ پھر یہ بولنے والا نہ روئے گا نہ گائے گا

شعورؔ آخر اسے ہم سے زیادہ جانتے ہو تم؟
بہت سیدھا سہی لیکن تمہیں تو بیچ کھائے گا
 

Rate it:
28 Jan, 2019

More Anwar Shaoor Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Owais Mirza
Visit Other Poetries by Owais Mirza »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Anwar Shaoor is my one of the oldest poet, in my academic education I had many poetries by him. After the long time I get the page of his collection where I read this ' Basharat Ho Kai Ab Mujh Se' , I love it.

By: nabeel, khi on Jan, 29 2019

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City