ہم اپنی فطرت سے مجبور ہیں

Poet: UA
By: UA, Lahore

لوگ اپنی عادت سے مجبور ہیں
ہم اپنی فطرت سے مجبور ہیں
لوگ باتیں بنانے سے باز نہیں آتے ہیں
ہم لوگوں کی باتیں سہہ نہیں پاتے ہیں
گوشہءِ نتہائی کو اپنا مسکن کیا ہے
ہم محافِل میں یوں نہیں جاتے ہیں
لوگ اپنی عادت سے مجبور ہیں
ہم اپنی فطرت سے مجبور ہیں

Rate it:
26 Feb, 2019

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: uzma ahmad
sb sy pehly insan phr Musalman and then Pakistani
broad minded, friendly, want living just a normal simple happy and calm life.
tmam dunia mein amn
.. View More
Visit 2937 Other Poetries by uzma ahmad »

Reviews & Comments

ہم اپنی فطرت سے مجبور ہیں
لوگ اپنی عادت سے مجبور ہیں
لوگ باتیں بنانے سے باز نہیں آتے ہیں
ہم لوگوں کی باتیں سہہ نہیں پاتے ہیں
یوں خلوت میں اپنی بزم سجاتے ہیں
ہم محفلوں میں نہیں جاتے ہیں
ہم اپنی فطرت سے مجبور ہیں
لوگ اپنی عادت سے مجبور ہیں

By: uzma, Lahore on Feb, 27 2019

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City