اے ساقی جام اب پیاسوں کو پلائیے

Poet: نواب رانا ارسلان
By: نواب رانا ارسلان, Ismailabad, Umerkot

اے ساقی جام اب پیاسوں کو پلائیے
میخانے کا راستہ اب ہمیں بھی دکھائیے

ہمیں دیکھ کر کچھ تو خیال کیجیئے
شکستہ بالی میں اب اور تھوڑا ستائیے

چوٹ کھانے کے بعد انداز ہے یہ
کہ تمنّا ہے ہمیں پھر سے آزمائیے

آپ کو بھی دیوانہ بنا دیں گے
زرا بزمِ سُخن میں آپ بھی آئیے

اس محفل میں رنجیدہ شخص بھی ہستا ہے
یہاں بیانِ درد پہ آپ آنسو نہ بہائیے

جنونِ عشق لے کر ہمارے پاس وہ آئے
ناز و ادا سے ہم بولے ارے نہ گھبرائیے

ہمارا تو کام ہے عشاق کے کام آنا
ہمارا حوصلہ دیکھیئے زرا ہاتھ تو ملائیے

ارسلؔان ہم تو ٹھہرے وقت کے شاعر
سخنُ آڑائی اب میری غزل میں پائیے

Rate it:
11 Mar, 2019

More Urdu Ghazals Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: نواب رانا ارسلان
Visit 28 Other Poetries by نواب رانا ارسلان »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City