اُدھر سے چُھوٹے

Poet: Majassaf imran
By: Majassaf imran, Gujrat

اُدھر سے چُھوٹے یہاں پکڑے گے
وہاں رشتے تھے یہاں دار سبھی

بات بات پہ خراساں تو تو میں میں
لمبے چُولوں میں یہاں فنکار سبھی

انسان ہیں ہم کوسمجھتے تا حد زیادی
زبانوں میں رکھے ہیں تلوار سبھی

‏‎نہیں ممکن تا مرگ برگشت یہاں سے
امیدوارم ہیں میرے رشتہ دار سبھی

سکوں ہوا گرم دوھوپ سَرد موسم کی نظر
جی اُٹھتا ہوں جب آتی ہے آواز اچھے ہیں حالات ابھی

خود کو مار دیتا ہوں با خواستہ ھا نفیس میں
ماں کہتی ہے جب گھر کو دیکھنا بہن رہتی ہے ابھی

 

Rate it:
31 Mar, 2019

More Life Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Majassaf imran
Visit 195 Other Poetries by Majassaf imran »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City