زبان پر دباٶ کی ، لگام کے خلاف ہوں

Poet: اخلاق احمد خان
By: Akhlaq Ahmed Khan, Karachi

زبان پر دباٶ کی ، لگام کے خلاف ہوں
غلام کے نہیں خلاف ، نظام کے خلاف ہوں

جڑی ہے جن کی چھاپ سے وحشتِ اسیریِ قوم
ایسی ہر اک نسبت و ، نام کے خلاف ہوں

شر سے بچاٶ جب موجبِ ادب رہے
میں ایسے کھوکھلے ، احترام کے خلاف ہوں

قبیلہ حسب و نسب پہچان کی حد تک ہیں ٹھیک
بنٹے جو امت تو نعرہِ ، اقوام کے خلاف ہوں

برپا کر کے شورِش خود رہے دم بخود
میں ایسے شخص کے ، کہرام کے خلاف ہوں

امیر اور غریب کے لۓ انصاف کے دوہرے معیار
اخلاق میں ایسے سبھی ، اقدام کے خلاف ہوں

Rate it:
01 Apr, 2019

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Akhlaq Ahmed Khan
Visit 83 Other Poetries by Akhlaq Ahmed Khan »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City