حسرت

Poet: Muhammad Awais Dossi
By: Muhammad Awais dossi, Lahore

چُرا لائی ہے خوشبو تیری سانسوں سے بہار
بسی ہوئی ہے مہک تیرے بدن کی پُروائیوں میں

اوس قطرے چمکتے ہیں تیرے پسینے کی مانند
تیرے چہرے کی جھلک ہے صبح کے اجالوں میں

نرم و ملائم جسم پے تیرے کہ نظر تک نہ ٹھہرے
بھیگوے رکھا ہو جیسے برسوں تمہیں شہد میں

دودھ دھولی رانوں پے تیری سر رکھ کر
اُتر جاؤں میں تیری روح کی وسعتوں میں

چھُو لوں تجھ کو اور فنا ہو جاؤں
قیامت خیز غضب ہے تیری قربت میں

تیری دید سے ہے وابستہ آسودگی دل کی
اک تیرے دیدار سے ہی ہے رونق میری تنہائیوں میں

تیرے گھنے گیسوؤں کی چھاؤں میں گزرے ہر شب
وقت کبھی ایسا بھی آئےگا دوسی، تیری زندگی میں
 

Rate it:
05 Apr, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Muhammad Awais dossi
Visit 5 Other Poetries by Muhammad Awais dossi »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City