حسن کی تصدیق نہیں کرتا ہے

Poet: UA
By: UA, Lahore

حسن کی تصدیق نہیں کرتا ہے
اب آئینہ تعریف نہیں کرتا ہے

دلکشی رہی نہ رعنائی رہی
حسن رہا نہ دِلربائی رہی
کتنا ہی سج سنور لیں
کیسا ہی سنگھار کر لیں

حسن کی تصدیق نہیں کرتا ہے
اب آئینہ تعریف نہیں کرتا ہے

عام سے انسان تھے
حسین تھے نہ خوش گمان تھے
ہاں مگر انداز تھے
اور کچھ ادائیں تھی
عہدِ شباب کی کشش تھی
جو کسی نظر کو بھا گئی
جو کِسی کا دِل لبھا گئی تھی
اسی کشش کو آئینے میں دیکھ کر
اپنی نظر شرما گئی تھی
اور کچھ اترا گئی تھی
لیکن وہ لمحے ٹل گئے
سارے انداز بدل گئے
جوانی ڈھل گئی
وقت بدل گیا
وقت کے بدل جانے سے
کِسی نظر کا اثر بھی بدل گیا
نظرکا معیار بدلنے سے
آئینے کا نظریہ بھی بدل گیا

حسن کی تصدیق نہیں کرتا ہے
اب آئینہ تعریف نہیں کرتا ہے
 

Rate it:
27 May, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: uzma ahmad
sb sy pehly insan phr Musalman and then Pakistani
broad minded, friendly, want living just a normal simple happy and calm life.
tmam dunia mein amn
.. View More
Visit 2849 Other Poetries by uzma ahmad »

Reviews & Comments


وقت بدل گیا
شباب ڈھل گیا
وقت بدلنے سے
شباب کے ڈھلنے سے
نظر کا معیار بدل گیا
نظر کا معیار بدللے سے
سارا نشہ اترگیا
آئیلے کا نظریہ بدل گیا
کتنا ہی سج سنور لیں
کیسا ہی سنگھار کر لیں
حسن کی تصدیق نہیں کرتا ہے
آئینہ تعریف نہیں کرتا ہے

By: Uzma, Lahore on May, 27 2019

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City