جو کبھی حرام تھا

Poet: نعمان صدیقی
By: Noman Baqi Siddiqi, Karachi

 جو کبھی حرام تھا ان کے لیے حلال ہے
تبدیلی آگئی ہے جو وہ بڑی با کمال ہے

کیا ہے جو کہا نہیں جو کہا تھا وہ کیا نہیں
اعظم ہمارا وزیر بھی کیسا صاحب جمال ہے

اس کا نہیں قصور ہے وہ صاحبِ سرور ہے
مقتدر کوئی اور ہے جس کا یہ جلال ہے

ہر ایک پر اُگلا زہر ، ہر لمحہ و ہر پہر
جو بھی ہو رہا ہے اب یہ اس کا ہی وبال ہے

تم ن سے نعمان ہو چپ رہو ڈرتے رہو
خدا مہربان ہے وہ رب ذوالجلال ہے

Rate it:
16 Jun, 2019

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Noman Baqi Siddiqi
Visit 60 Other Poetries by Noman Baqi Siddiqi »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City