تنہائی

Poet: ارسلان
By: Arsalan Awan, Kallar kahar

رات کے لرزاں ساۓ ہیں
اک دشت بیاباں اور میں تنہا

ہر جانب گھپ اندھیرا ہے
اک دشت بیاباں اور میں تنہا

چاند کی پھیلی چاندی میں
اِس بال بکھیرے جنگل میں

اک خون پیاسا ڈیرہ ہے
اک دشت بیاباں اور میں تنہا

راہوں میں اب اس ڈیرے کی
جذبات کا ماتم کدہ بھی ہے

اُس ماتم کدے کا پھیرا ہے
اک دشت بیاباں اور میں تنہا

جذبات بَلی کب چڑھ جائیں
کب خواب سہانے راکھ بنیں

کب آنکھ کے موتی خاک چومیں
کب آہیں میرا ساتھ بنیں

کب لحد کا ساتھ میسر ہو
کب تن میرے کو بھاگ لگیں

جب سحر ہو اس جنگل میں
تربت پہ جب احباب ملیں

اسی سحر کا متلاشی ہوں
اک دشت بیاباں اور میں تنہا
 

Rate it:
22 Jun, 2019

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Arsalan Awan
Visit 2 Other Poetries by Arsalan Awan »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City